آل پارٹیز کانفرنس بامقصد‘ تعمیری اور نتیجہ خیز ہونی چاہئے: فاروق ستار

08 جولائی 2013

اسلام آباد (محمد ریاض اختر‘ خصوصی رپورٹر) متحدہ قومی موومنٹ کے پارلیمانی لیڈر ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا ہے بارہ جولائی کی مجوزہ اے پی سی بامقصد‘ تعمیری اور نتیجہ خیز ہونی چاہئے۔ نئی نیشنل سکیورٹی پالیسی میں انسداد دہشت گردی شق کو بھی شامل کر لیا جائے تاکہ قیام امن کے لئے بدامنی‘ معاشی بدحالی اور دیگر ایشوز پر بھی نظر رکھی جا سکے۔ ”نوائے وقت“ سے خصوصی انٹرویو میں ان کا کہنا تھا ایم کیو ایم کی قیادت کے حوالے سے کچھ عناصر پروپیگنڈا مہم کا سہارا لئے ہوئے ہیں۔ انہیں اپنی سیاست میں قومی مفاد ملکی سلامتی اور عوامی مفاد کو اہمیت دینا چاہئے۔ پاک چین تعلقات کے حوالہ سے انہوں نے بتایا چین سے ہمارے دوستانہ‘ تاریخی اور مثالی تعلقات ہیں جو ہر گزرتے دن کے ساتھ مضبوط ہو رہے ہیں۔ ہمیں تجارتی تعلقات کے ساتھ توانائی بحران‘ بدامنی‘ مہنگائی اور بے روزگاری جیسے مسائل پر بھی دھیان دینا پڑے گا۔ لاہور کراچی موٹر وے اور پشاور کراچی بلٹ ٹرین منصوبوں کے بارے میں انہوں نے بتایا اقتصادی تعاون کے معاہدوں میں توانائی بحران کو بہت زیادہ اہمیت دی جائے۔ وقت آگیا ہے ہم معاہدوں سے آگے بڑھ کر اصل ایشوز کی طرف تعمیری قدم اٹھائیں۔ ہم ٹیکسوں کا منصفانہ نظام لا کر مہنگائی اور بے روزگاری کو کم کر کے اور لوکل باڈیز انتخابات سے عوامی نمائندگی کا خواب پورا کر سکتے ہیں۔ انہوں نے بتایا سیاسی رہنما¶ں کو اندرونی و ذاتی اختلافات کو ہوا نہیں دینی چاہئے۔ پسند و ناپسند کی پالیسی سے قومی مفادات کو زچ پہنچنے کا خطرہ ہے۔ کاش ہم جمہوری‘ سیاسی بردباری سے وطن کی خدمت کرنے کا عہد پورا کریں۔