چھٹی کے باوجود بدترین لوڈشیڈنگ‘ گرمی اور حبس سے مزید ایک شخص ہلاک‘ کئی بیہوش

08 جولائی 2013

لاہور (نامہ نگاران+ این این آئی) بارش سے موسم خوشگوار ہونے اور تعطیل کے باوجود لاہور سمیت ملک بھر میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کے دورانیہ میں خاطر خواہ کمی واقع نہ ہوسکی۔ شہری اور دیہی علاقوں میں 10سے 19گھنٹے تک لوڈ شیڈنگ جاری رہی جبکہ شدید گرمی اور حبس کے باعث ایک شخص دم توڑ گیا جبکہ کئی افراد بیہوش ہو گئے۔ گڑھی شاہو کے علاقوں میں مسلسل چھ گھنٹے تک بجلی کی بندش پر شہری واپڈا کے دفتر پہنچ گئے تاہم عملہ تالے لگا کر غائب ہوگیا۔ تفصیلات کے مطابق ملک میں اتوار کی تعطیل کے باوجود لوڈشیڈنگ اپنے عروج پر رہی۔ دیہی علاقوں کے رہائشیوں کیلئے بجلی کا بحران 16 سے 19 گھنٹے تک بر قرار ہے۔ ذرائع کے مطابق بجلی کی پیداواری کمپنیوںکو سر کلر ڈیٹ کی مد میں ادائیگیاں ہوگئی ہیں۔ ایک دو روز میں پاور پلانٹس اپنی استعداد کے مطابق پیداوار شروع کر دیں گے جس سے لوڈشیڈنگ کے دورانیہ میں کمی ہو گی۔ سرگودھا سے نامہ نگار کے مطابق شہر اور گردونواح میں گرمی اور حبس کی وجہ سے متعدد افراد بے ہوش ہوگئے جبکہ غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ بھی جاری رہا۔ گزشتہ روز اتوار کے باعث لوگوں کی بڑی تعداد نے گرمی سے بچنے کےلئے نہروں کا رخ کیا۔ ہسپتال ذرائع کے مطابق 4 افراد جن میں ایک خواتین بھی شامل ہے کو گرمی کے باعث بیہوشی کی حالت میں ہسپتال لایا گیا۔ وزیرآباد سے نامہ نگار کے مطابق محنت کش گرمی کی شدت سے دل کا دورہ پڑنے سے چل بسا۔ محلہ صلے کا رہائشی 40 سالہ محمد اشرف مین بازار میں اشیا خوردونوش ریڑھی پر فروخت کر رہا تھا کہ اچانک گرمی کی شدت کے باعث دل کا دورہ پڑا اور بے ہوش ہو کر گر پڑا اور زندگی کی بازی ہار گیا۔ پاکپتن سے نامہ نگار کے مطابق شہر اور گردونواح میں غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 20 گھنٹے سے تجاوز کر گیا ہے جبکہ بجلی کی بندش کے باعث کاروبار زندگی بری طرح مفلوج ہو کر رہ گیا ہے۔ شدید گر می اور حبس میں ظالمانہ لوڈشیڈنگ کے باعث کئی شہری طبیعت خراب ہو نے کی وجہ سے ہسپتال پہنچ گئے ہیں۔ دو سری طرف بدترین لوڈشیڈنگ کے باعث شہری پانی کی بوند بوند کو ترس گئے ہیں۔ شہریوں نے حکومت کیخلاف بدترین لوڈشیڈنگ پر احتجاج کرتے ہوئے فوری ظالمانہ لوڈشیڈنگ کم کر کے لوڈشیڈنگ کا شیڈول جاری کرنے کا مطا لبہ کیا ہے۔ پھلروان سے نامہ نگار کے مطابق لوڈشیڈنگ بدستور 16گھنٹے تک جاری رہی۔ شدید گرمی اور بجلی بند ہونے کے باعث کئی افراد بیہوش ہوگئے، درجہ حرارت 44 تک برقرار رہا۔وہاڑی سے نامہ نگار کے مطابق شہر اور گردونواح میں 18گھنٹے کی بدترین لوڈشیڈنگ نے عوام کا جینا حرام کررکھا ہے جس کی وجہ سے کاروبار زندگی مفلوج ہو کر رہ گیا ہے جبکہ بجلی کی بار بار ٹرپنگ کی وجہ سے لوگوں کی گھریلو اشیا جل گئیں۔ سیالکوٹ سے نامہ نگار کے مطابق شہری علاقوں میں 16گھنٹے جبکہ دیہات میں 20گھنٹے کی لوڈشیڈنگ جاری رہی جبکہ دیہی علاقوں میں بدترین لوڈشیڈنگ کی گئی۔جہلم سے نامہ نگار کے مطابق جہلم شہر اور گردونواح مےں بجلی کی بدترےن لوڈ شےڈنگ اور باربارٹرپنگ نے لاکھوں صارفےن کا ناک مےں دم کر دےا ، لوڈ شےڈنگ کا دورانےہ 20گھنٹے تک جا پہنچا جس سے صارفےن کو مشکل ترےن حالات کا سامنا کرنا پڑا ، بجلی کی لوڈ شےڈنگ کے باعث پانی اور برف کی بھی شدےد قلت رہی۔بچیانہ سے نامہ نگار کے مطابق بجلی کے کم وولٹیج کے خلاف دیہاتیوں نے ٹائر جلا کر لاہور جڑانوالہ مین روڈ پر ٹائروں کو آگ لگا کر لنڈیانوالہ کے اڈا صوفی دی کوٹھی کے قریب بلاک کر دی اور ایک گھنٹے تک ٹریفک کو بلاک رکھا۔

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...