زرمبادلہ کے ذخائر میں خطرناک کمی، ڈیڑھ ارب ڈالر دبئی سے خریدنے پر غور

08 جولائی 2013

 اسلام آباد (آئی این پی)سٹیٹ بینک کے زیر ملکیت زرمبادلہ کے ذخائر میں خطرناک حد تک کمی کا انکشاف ہوا ہے۔ غیر ملکی زرمبادلہ کے حقیقی ذخائر 3 ارب ڈالر سے بھی کم رہ گئے۔ وفاقی حکومت زرمبادلہ کے ذخائر کو سہارا دینے کیلئے ایک سے ڈیڑھ ارب ڈالر دبئی کی اوپن مارکیٹ سے خریدنے پر غور کررہی ہے۔ وزارت خزانہ کے ذرائع کے مطابق زرمبادلہ کے سرکاری ذخائر جوکہ سٹیٹ بینک کی جانب سے 6 ارب 96 لاکھ ڈالر بتائے جارہے ہیں، حقیقت میں اس سے کہیں کم ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے سٹیٹ بینک نے 3 ارب ڈالر کمرشل بینکوں سے سہ ماہی 10 فیصد مارک اپ شرح پر لے رکھے ہیں جو تقریباً ڈیڑھ سال قبل عارضی طور پر 3 ماہ کیلئے حاصل کئے گئے تھے مگر تاحال واپس نہیں کئے گئے جبکہ سٹیٹ بینک اس پر 10 فیصد مارک اپ (سہ ماہی) ادا کررہا ہے۔ اقتصادی ماہرین کے خیال میں 3 ارب ڈالر زرمبادلہ کے ذخائر محض ایک سے ڈیڑھ ماہ کی درآمدات کیلئے کافی ہیں اور کسی ملک کے پاس چھ ماہ کی درآمدات کے مساوی زرمبادلہ کے ذخائر ہونا ضروری ہیں۔