امریکی جنگ کو خیر آباد کہہ کر پاکستان مسائل کی دلدل سے نکل سکتا ہے: وسیم اختر

08 جولائی 2013

لاہور (خصوصی نامہ نگار)ممبر صوبائی اسمبلی اور امیر جماعت اسلامی پنجاب ڈاکٹر سید وسیم اختر اور سیکرٹری جنرل نذیر احمد جنجوعہ نے لاہور پرانی انارکلی فوڈسٹریٹ دھماکے میں5افراد کی ہلاکت پر شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے ملک دشمن بیرونی عناصر کی کاروائی قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ سابقہ حکومت کی غلامانہ پالیسیوں نے ملک کا بیڑہ غرق کرکے رکھ دیا ہے۔ لاہور دھماکہ پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی ناکامی کا منہ بولتاثبوت ہے۔ ساڑھے چارسالوں کے دوران لاہور میں 72بم دھماکے ہوئے جن میں سینکڑوں افراد جاں بحق ہوئے۔ صرف گزشتہ 6ماہ اور 6 دنوں میں پورے ملک میں 339بم دھماکوں میں1089افراد ہلاک ہوئے اور2590 افراد زخمی ہوئے جبکہ نئی حکومت کے آنے کے بعد سے اب تک کل25دھماکے ہو چکے ہیںاور ان میں161افراد لقمہ اجل بنے۔ پاکستان کے حالات دن بدن خراب تر ہوتے چلے جارہے ہیں۔ نام نہاد دہشتگردی کے خلاف جنگ میںتقریباً100ارب ڈالر اور50ہزار قیمتی جانوں کا نذرانہ دینے کے بعد بھی پاکستان کے کردار کو شک کی نظر سے دیکھا جاتا ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ نئی حکومت امریکی جنگ کو خیرباد کہہ کر توجہ اور وسائل ملک کی ترقی پر مرکوز کرے۔ وطن عزیز مشکلات کی دلدل سے اس وقت تک نہیں نکل سکتا جب تک حکمران سنجیدگی کا مظاہرہ نہیں کرتے۔