اپنی حفاظت خود کرنی ہے تو پھر آئی جی بتائیں پولیس کا کیا کام ہے: شہری

08 جولائی 2013

لاہور (نامہ نگار) آئی جی پنجاب پولیس خان بیگ کی جانب سے عوام کیلئے خود اپنی سکیورٹی کا بندوبست کرنے کے بیان پر شہریوں نے شدید تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پولیس کا کام امن و امان کا قیام برقرار رکھنا ہے۔ لوگوں نے خود ہی اپنی حفاظت کرنی ہے اور پولیس اپنی ذمہ داریاں پوری کرنے سے قاصر ہے تو پھر محکمہ پولیس کیلئے بجٹ میں 71 ارب روپے کی خطیر رقم دینے کا کیا جواز ہے۔ آئی جی پنجاب پولیس خان بیگ نے بم دھماکے والی جگہ کا دورہ کرنے کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے عوام کو مشورہ دیا تھا کہ وہ اپنی سکیورٹی کیلئے خود بھی انتظام کریں جس پر شہریوں نے شدید تنقید اور تعجب کا اظہار کیا۔ شہریوں نے نوائے وقت فون کر کے کہا ہے کہ پولیس شہر میں امن و امان قائم رکھنے میں ناکام ہے۔ اپنی ڈیوٹی نہیں دے سکتی تو پھر آئی جی پنجاب بتائیں کہ محکمہ پولیس کے قیام کا مقصد کیا ہے۔ کیا پولیس کا کام لوگوں کو ناکوں پر تنگ کرنا، رشوت لینا اور پولیس مقابلوں میں پار کرنا رہ گیا ہے۔ خدارا وزیراعلیٰ پنجاب ہی آئی جی پنجاب کے اس بیان کا نوٹس لیں اور پولیس سربراہ کو ان کی ذمہ داریاں یاد دلائی جائیں۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹس فیس بک اور ٹویٹر پر بھی لوگوں نے آئی جی پنجاب کے بیان پر سخت تنقید کی اور کہا کہ اگر عوام نے اپنی سکیورٹی کے انتظامات خود کرنے ہیں تو پولیس کس مرض کی دوا ہے۔ محکمہ پولیس کو بجٹ 2013-14ءمیں 71ارب روپے کی خطیر رقم کن مقاصد کے حصول کیلئے دی جا رہی ہے؟ اسکا جواب بھی دیا جائے۔