”بھارتی خفیہ ایجنسیاں بلوچستان، سندھ سمیت ملک بھر میں دہشت گردی کروا رہی ہیں“

08 جولائی 2013

لاہور (خصوصی نامہ نگار) مذہبی و سیاسی رہنماﺅںنے کہا ہے کہ بھارتی خفیہ ایجنسیاںایک طرف بلوچستان، سندھ اور ملک کے دیگر شہروں و علاقوں میں تخریب کاری اور دہشت گردی کروا رہی ہیں اور دوسری طرف پس پردہ سفارتکاری کے ذریعہ تحریک آزادی جموں کشمیر کو کمزورکرنے کی سازشیں کر رہی ہیں۔ حکمرانوں کو چاہئے کہ وہ بھارت کے کسی دھوکہ میں نہ آئیں۔ بھارت نے ٹریک ٹو ڈپلومیسی اور یکطرفہ دوستی کی پالیسیوں کو ہمیشہ مقبوضہ کشمیر پر اپنا فوجی قبضہ مستحکم کرنے کیلئے استعمال کیا ہے۔ کشمیریوں کی مرضی کے بغیر مسلط کردہ کوئی حل کشمیری و پاکستان عوام قبول نہیں کریں گے۔ بھارتی تخریب کاری و دہشت گردی کے خاتمہ کیلئے ملک میں ہندوستانی ایجنسیوں اور دیگر اسلام دشمن ملکوںکی مداخلت ختم کرنے کی ضرورت ہے۔ ان خیالات کا اظہار پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی، مولانا امیر حمزہ، حافظ عبدالغفار روپڑی، محمد خان لغاری، حافظ سیف اللہ منصور، مولانا ابوالہاشم اور حافظ خالد ولید نے نوائے وقت سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوںنے کہا کہ بھارت مسئلہ کشمیر پر پس پردہ سفارتکاری اور دوستی و تجارت کا ڈھونگ دنیا کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کیلئے رچا رہا ہے۔ وہ پاکستان سے کسی قسم کے مذاکرات میں کسی طور مخلص نہیں ہے۔ بھارت نے اپنا ہر حربہ آزما کر دیکھ لیا ہے لیکن اس کے باوجود کشمیریوں کے عزم میں کمی نہیں آ سکی۔ پاکستان کے استحکام اور بقاءکے لئے کشمیر کو بھارت کے غاصبانہ قبضہ سے چھڑانا بہت ضروری ہے۔