پرچون فروشوں کی سختی

08 جولائی 2013

مکرمی! ہر سال رمضان میں پرائس کنٹرول کمیٹیاں اشیاءخورد و نوش کی قیمتیں مقرر کرتی ہیں۔ پرائس کنٹرول کمیٹیوں میں سرکاری ارکان کے علاوہ بڑے بڑے ہول سیل دکاندار شامل ہوتے ہیں دالیں ایک روپیہ کلو بھی کوئی پرچون فروش زائد لے تو فوری طور پر دو ہزار سے پانچ ہزار جرمانہ کر دیا جاتا ہے جبکہ بڑے بڑے سٹاکسٹ جن کے پاس ہزاروں بوری دالیں سٹاک میں ہوتی ہیں وہ راتوں رات پانچ روپے کلو ریٹ بڑھا دیں تو انہیں کوئی پوچھنے والا نہیں سختی صرف پرچون فروش کے مقدر میں ہے جو کہ دکان کا کرایہ ہزاروں میں ادا کر رہا ہے۔ پرچون فروش ہر چیز جب مہنگی خریدتا ہے تو مہنگی ہی فروخت کرے گا اور سستی خریدے گا تو سستی فروخت کرے گا خریدار کا تعلق پرچون فروش سے ہے اس لئے سب پرچون فروش پر ناراض ہوتے ہیں پرائس کنٹرول کمیٹیا ں ہول سیل اور بڑے سٹاکسٹ پر بھی کنٹرول کریں۔(شیخ محمد شفیق مسلم بازار، گجرات)