گرونانک کے جنم دن کی تقریبات،2ہزار سے زائد سکھ یاتریو ں کی آمد

07 نومبر 2017

حسن ابدال (نامہ نگار) گرونانک کے 549ویں جنم دن کی تقریبات کے لیے بھارت سے آئے ہوئے 2ہزار سے زائد سکھ یاتری اتوار اور پیر کی درمیانی رات حسن ابدال پہنچے۔ ڈپٹی کمشنر رانا اختر حیات ، متروکہ وقف املاک بورڈ کے ڈپٹی سیکرٹری فراز عباس نے یاتریوں کا استقبال کیا۔ پنجہ صاحب پہنچے پر سکھ یاتریوں نے اپنی مذہبی رسومات بلخصوص اشنان ، ماتھا ٹیکی اور یاترا پنجہ صاحب ادا کی ۔سکھ یاتریوں کی آمد کے موقع پر سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے تھے ۔ پولیس ایلیٹ فورس کے ساتھ ساتھ رینجر کی بھی بھاری نفری تعینات کی گئی تھی ۔ اس موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے سکھ یاتریوں کے جتھہ لیڈر گرومیت سنگھ نے کہا کہ دو مرتبہ سکھ یاتریوں کو پاکستان آمد سے روکا گیا اب تیسری مرتبہ اجازت ملنا بھارت میں رہنے والے سکھوں کے لیے انتہائی خوش آئند ہے ۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت جس طرح پاکستان میں موجود سکھوں کے مذہبی مقامات کی دیکھ بھال اور بہتری کے لیے اقدامات کر رہی ہے وہ قابل ستائش ہے ۔ انہوں نے پنجاب میں سکھوں کے لیے علیحدہ میرج ایکٹ کی منظوری کو سراہا۔نہو ںنے متروکہ وقف املاک بورڈ کے چیئرمین صدیق الفاروق کی جانب سے ننکانہ صاحب میں خاتون سکھ یاتری کی اتوار کی تعطیل کے باوجود 24گھنٹوں میں اپنے خرچے واپس بھارت بھیجوانے کو سراہا۔ دریں اثناء اس سال بھارت سے سکھ مذہب کے روحانی و مذہبی پیشوا پانچ پیارے بھی حسن ابدال میں مذہبی تقریبات میں شریک ہوئے ۔ انہو ں نے بہتر انتظامات پر حکومت پاکستان اور متروکہ وقف املاک بورڈ کے چیئرمین صدیق الفاروق کا خصوصی شکریہ ادا کیا۔