انگریز سے ورثے میں ملنے والا نظام تعلیم ہمارے مسائل کی جڑہے

07 نومبر 2017

کلرسیداں(نامہ نگار ) ممتازعلمی اور روحانی شخصیت پروفیسرڈاکٹرساجدالرحمن سجادہ نشین آستانہ عالیہ مجددیہ بگھارشریف نے کہاہے کہ انگریز سے ورثے میں ملنے والا نظام تعلیم اور نصاب تعلیم ہمارے مسائل کی جڑہے، ہمیں ایسے نظام تعلیم اور نصاب تعلیم کی ضرورت ہے جوجدیدعلوم کے ساتھ ساتھ (صفحہ6بقیہ3)

ہمارے طلبہ کارشتہ محمدرسول اللہ ؐ سے مستحکم بنائے۔ وہ دارالعلوم یعقوبیہ کے سالانہ جلسہ تقسیم انعامات کی پروقار تقریب سے خطاب کررہے تھے۔پروفیسرساجدالرحمن نے کہاکہ ان شاء اللہ کہوٹہ کے مقام پر بہت جلد گریجویشن اور پوسٹ گریجویشن سطح تک تعلیم کے لئے ایک معیاری ادارہ قائم کیاجارہاہے اس کے ساتھ ساتھ ایک لآ کالج کے قیام کابھی ارادہ ہے جس کاالحاق بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی سے ہوگا۔ تقریب کے صدرنشین سابق چیف جسٹس اسلام آبادہائی کورٹ سردار محمداسلم ، صاحبزادہ نورالعارفین نیریاں شریف، صاحبزادہ محبوب حسین چشتی ، حاجی محمدمنیر، ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر اٹک راجہ امجدجنجوعہ، ڈپٹی کمشنر سی ڈی اے قاضی احمد صہیب، سیدعلی محی الدین شاہ، ڈاکٹرشبیرکلہو اور حاجی حبیب اللہ نے بھی خطاب کیا۔ قرات، نعت ، اردو، انگریزی، عربی تقریر، بیڈمنٹن ،50میٹر ریس اور ٹیبل ٹینس کے مقابلہ جات میں دارالعلوم یعقوبیہ بگھارشریف کے طلبہ نے کامیابی حاصل کی جبکہ کرکٹ فیض الاسلام سکول مندرہ، والی بال گورنمنٹ ہائیرسیکنڈری سکول نارہ، جیولن تھرو اور شاٹ پٹ میں گورنمنٹ ہائیر سیکنڈری سکول نارہ جبکہ 100میٹر ریس میں کمال ماڈل سکول چوک پنڈوڑی نے کامیابی حاصل کی۔13ویں سالانہ ہفتہ کھیل میں تحصیل ہائے کہوٹہ، کلرسیداں اور گوجرخان سے مجموعی طورپر 20سے زائد گورنمنٹ اور پرائیویٹ تعلیمی اداروں نے شرکت کی۔ کامیاب طلبہ میں 51ہزار نقدی معہ ٹرافیوں کے انعامات تقسیم کیئے گئے۔

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...