وزیراعلیٰ سندھ کی ہاکی دوستی‘ 100 ملین روپے فیڈریشن کے لئے جاری

07 نومبر 2017

کراچی ( اسپورٹس رپورٹر)وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے صوبہ سندھ میں پاکستان ہاکی فیڈریشن کی سرگرمیوں کو فروغ دینے کے لئے پاکستان ہاکی فیڈریشن کے لئے 100 ملین روپے گرانٹ کی منظوری دی ہے اور کہا ہے کہ ہاکی اسٹیڈیم کو دوبارہ تعمیر کیا جائے۔ انہوں نے یہ بات آج وزیراعلیٰ ہاؤس میں ہاکی کے صدر محمد خالد سجاد کھوکھر کی سربراہی میں پاکستان ہاکی فیڈریشن (پی ایچ ایف) کے وفد سے ملاقات کے دوران کہی۔ اجلاس میں شرکت کندہ وفد کے دیگر ارکان میں، طارق ہدیٰ، نائب صدر شہباز احمد سینئر، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکرٹری سہیل راجپوت، سیکرٹری خزانہ حسن نقوی، سیکریٹری کھیل مسٹر چیف انجینئر کراچی کنٹونمنٹ بورڈ زوہیب مجاہد بخاری، محکمہ کھیل کے چیف انجنیئر اسلم مہر و دیگر حکام نے شرکت کی۔ انہوں نے کہا کہ وہ ہاکی کے شاندار ماضی کودوبارہ بحالی کے خواہاں ہیں۔ میں آپ کے ساتھ ہر ممکن تعاون کروں گا جو بھی آپ کو درکار ہوگا مگر آپ صوبے میں اپنے کلبز کو فعال بنائیں اور شہر میں بین الاقوامی ہاکی شروع کی جائے۔ پاکستان ہاکی فیڈریشن کے صدر بریگیڈیر (ر) محمد خالد نے کہا کہ پی ایچ کو مالی مشکلات کا سامنا ہے اور ہاکی اسٹیڈیم کو خطرناک عمارت قرار دیا گیا ہے۔ اس پر وزیراعلیٰ سندھ نے سیکرٹری خزانہ حسن نقوی کو ہدایت کی کہ تین دن کے اندر 3.5 ملین روپے جاری کیے جائیں اور اجلاس کو بتایا گیا کہ صوبائی حکومت عبدالستار ایدھی ہاکی اسٹیڈیم کو دوبارہ تعمیر کرے گی۔ انہوں نے اجلاس میں موجود چیف انجنیئر کھیل اسلم مہر کو ہدایت کی اسٹیڈیم کے سروے کا کام شروع کریں اور اس کی منظوری کے لئے پی سی-1 تیار کریں۔ پی ایچ ایف کے چیف نے کہا کہ انہیں معقول سالیانہ امداد کی ضرورت ہے تاکہ وہ صوبے سندھ میں اپنے آپریشن کو جاری رکھ سکیں۔ اس پر وزیراعلیٰ سندھ نے 100 ملین روپے سالانہ گرانٹ کی منظوری دیتے ہوئے سیکرٹری خزانہ کو ہدایات کی ہے کہ مجوزہ رقم 10 دن کے اندر جاری کی جائے۔ انہوں نے سیکریٹری خزانہ کو یہ بھی ہدایت کی کہ وہ اسے سالانہ بجٹ میں شامل کریں تاکہ ہر سال ہاکی فیڈریشن کو رقم مل سکے۔ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا ہے کہ 10 جنوری 2018 کو کراچی میں بین الاقوامی ہاکی تقریب کا انعقاد ہوگا جس میں بین الاقوامی کھلاڑی بھی میچز میں شرکت کریں گے۔ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ ہاکی فیڈریشن کراچی اور میرپرخاص میں قومی میچ بھی منعقد کرے گی، اسی طرح کے ایونٹ ا?ئندہ دو ماہ میں انٹرمیڈیٹ طلباء کے لئے بھی منعقد ہونگے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے ان پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وہ صوبے میں اپنے ہاکی کلبز کو فعال کریں اور فیڈریشن کے تحت کلبز کے قوانین ہونے چاہیں۔ اگر کلب کو پروفیشنلی طریقے سے چلانا ہے تو ہم ورلڈ کلاس کھلاڑی تیار کرسکیں گے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ کرکٹ کی طرح، ہاکی کو بھی کمرشنل بنانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے ہاکی فیڈریشن کو یقین دلایا ہے کہ وہ ان کے ساتھ ہر ممکن مدد اور تعاون کریں گے۔