سندھ ہائیکورٹ کو بم سے اڑانے کی دھمکی‘ 13 سالہ بچے کو جیل بھیجنے کا حکم

07 نومبر 2017

کراچی (نوائے وقت نیوز)انسداد دہشت گردی کی منتظم عدالت نے سندھ ہائیکورٹ کو بم دھماکے سے اڑانے کی دھمکی دینے والے 13سالہ کمسن ملزم کو بچہ جیل بھیج دیا۔تھانہ پریڈی پولیس نے 13 سالہ بچے پیر بخش کو انسداد دہشت گردی کی منتظم عدالت کے روبرو پیش کیا جہاں تفتیشی افسر انسپکٹر شہزاد نے عدالت کو بتایا کہ ملزم نے سندھ ہائیکورٹ کو بم سے اڑانے کی فون پر دھمکی مذاق میں دی۔ پولیس کے مطابق ملزم نے دھمکی اپنے والد کے نام پر رجسٹرڈ سم سے دی، واقعے کے بعد اسے فون کال ٹریس کرکے گلشن معمار سے گرفتار کیا گیا۔پولیس نے بتایا کہ ملزم اپنے والد کے ساتھ بکریاں چلاتا ہے۔عدالت نے پولیس کے بیان کے بعد مقدمے سے انسداد دہشت گردی کی دفعہ ختم کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے اسے عدالتی تحویل میں بچہ جیل بھیجنے کا حکم دے دیا۔دریں اثنا ء سیف سٹیز اتھارٹی کو لاہور میں گزشتہ 4 ماہ کے دوران ون فائیو پر 10 لاکھ 72 ہزار سے زائد جھوٹی ٹیلی فون کالز موصول ہوئیں۔پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی نے ون فائیو ہیلپ لائن کا گزشتہ چار ماہ کا کا ڈیٹا جاری کیا ہے۔ترجمان سیف سٹیز اتھارٹی کے مطابق ون فائیور پر یکم جولائی سے 31 اکتوبر تک 13 لاکھ کالیں موصول ہوئیں، جن میں سے 10 لاکھ 72 ہزار 600 کالیں جھوٹی ثابت ہوئیں۔ترجمان کے مطابق ون فائیو ہیلپ لائن پر جھوٹی کالز کرنے والوں کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے گا۔