مغرب کی موجودہ ترقی مسلمان سائنسدانوں کی مرہون منت ہے: ڈاکٹر طاہر امین

07 نومبر 2017

ملتان(نمائندہ نوائے وقت)بہاء الدین زکریایونیورسٹی ملتان کے شعبہ ریاضی میں منعقدہ بین الاقوامی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر طاہر امین نے کہا کہ مسلمان ماہرین اگر یونانی علوم کو اپنی تحقیق سے جِلا نہ بخشتے تو دنیا آج سائنسی میدان میں موجودہ ترقی سے بہت پیچھے ہوتی۔ آج پاکستان کے سائنسی اور ریاضی کے ماہرین کی ذمہ داری ہے کہ وہ دنیا میں ہونیوالی جدید تر تحقیق سے نہ صرف آگاہ رہیں بلکہ اس میں اپنی موجودگی کا مثبت اور مؤثر احساس دلائیں۔مغرب کی موجودہ ترقی مسلمان سائنسدانوں کی مرہون منت ہے جس کا اعتراف غیر جانبدار ماہرین علوم و فنون نے کیا ہے۔ سائنسی علوم میں تحقیق اور نئی جہتوں کی تلاش درحقیقت معاشرہ کے تعلیم یافتہ طبقے کی ذہنی بلندی اور علمی وسعت کی علامت ہوتی ہے۔ علم و سائنس پر کسی ملک یا گروہ کی اجاری داری نہیں ہوتی ۔ اس کانفرنس میں نظریاتی اور اطلاقی ریاضی کے میدا ن میں ریسرچ کرنے والے ریاضی دانوں نے اپنے مقالے پیش کئے ۔ کانفرنس تین سیشن پر محیط تھی اور ہر سیشن میں پہلی تین پوزیشنز حاصل کرنے والے ریسرچرز کو بالترتیب 20ہزار،10ہزار اور 5ہزار کیش انعامات دیئے جائیں گے۔ کانفرنس کی سائنٹیفک کمیٹی نے برطانیہ سے ڈاکٹرا یلسٹئر ،رومانیہ سے ڈاکٹر لون ، سپین سے ڈاکٹر جووان سمیت امریکہ ، آسٹریلیا اور ترکی کی نامور سائنسدان شامل ہوئے جبکہ اہم مقررین میں چین ، ملائیشیا، ترکی، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے ریاضی دان شامل ہیں۔ اس کانفرنس کے سرپرست اعلیٰ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر طاہر امین ، سرپرست ڈین پروفیسر ڈاکٹر طاہر محمود انصاری اور کانفرنس کے صدر شعبہ ریاضی کے چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر محمد اشرف ہیں۔ بین الاقوامی کانفرنس شعبہ ریاضی کے تعلیم ، تحقیق اور عملی میدان سے تعلق رکھنے والے ماہرین کو ایک پلیٹ فارم پر جمع ہو کر تبادلہ خیال کرنے کا بہترین موقع فراہم کررہی ہے۔کانفرنس میں فیکلٹی کے اساتذہ اور طلباء و طالبات کی کثیر تعداد بھی موجود تھی۔