سرکاری زرعی زمینوں کو رہائشی وتجارتی زمین میں تبدیل کرنے پر پابندی کی قراردادمنظور

07 نومبر 2017

اسلام آباد(صباح نیوز)سینٹ میں پیر کو ہر قسم کی سرکاری زرعی زمینوں کو رہائشی وتجارتی زمین میںتبدیل کرنے پر پابندی، بچوں کا تفریحی ٹی وی چینل کھولنے سمیت مختلف معاملات پرتین قراردادیں منظور کر لی گئیں۔وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں تجارتی مراکز کو سی سی ٹی وی کیمرے لگانے کا قانونی پابندبنانے سمیت ضابطہ دیوانی میں ضروری ردوبدل کے دونوں ترمیمی بلزاتفاق رائے سے منظور کر لیے گئے اجلاس میں سینیٹرجہانزیب جمالدینی نے قرارداد پیش کی کہ یہ رپورٹ سفارش کرتا ہے کہ وفاقی حکومت کے زیر انتظام زرعی زمین اور پہاڑی علاقہ جات کو رہائشی اور تجارتی زمین میں تبدیل کرنے پر پابندی عائد کی جائے حکومت کی طرف سے قرارداد کی مخالفت نہیں کی گئی قرارداد کو متفقہ طور پر منظور کر لیا گیا۔سینیٹر کریم خواجہ نے قرارداد پیش کی کہ یہ رپورٹ سفارش کرتا ہے کہ حکومت بچوں کی تعلیم سائنسی معلومات اور تخلیقی رجحانات کی طرف راغب کرنے اور ان کے اندر پاکستان کی ثقافت کی حقیقی روح اورنظریے کو اجاگر کرنے کے لیے پی ٹی وی کے علیحدہ چینل کا آغاز کرے۔وزیر مملکت اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا کہ پی ٹی وی اور ریڈیو سے بچوں کے پروگرامات دکھائے اور نشر کیے جا رہے ہیں۔انہوں نے قرارداد کی مخالفت نہیں کی۔قرارداد کو متفقہ طور پر منظور کر لیا گیا۔سینیٹر محسن عزیز نے سرکاری ملازمین کو پرائیویٹ رہائش کی رینٹل سیلنگ کو انکی تنخواہ سے منسلک کرنے کو قرارداد پیش کی حکومتی موقف کے لیے متعلقہ وزیر ایوان میں موجود نہیں تھے۔چیئرمین سینٹ نے کہا کہ اس کا مطلب یہ ہے کہ حکومت مخالف نہیں ہے۔قرارداد کو اتفاق رائے سے منظور کر لیا گیا۔

مری بکل دے وچ چور ....

فاضل چیف جسٹس کے گذشتہ روز کے ریمارکس معنی خیز ہیں۔ کیا توہین عدالت کا مرتکب ...