ٹیکساس کے چرچ میں فائرنگ کرنےوالا امریکی فضائیہ کا برطرف اہلکار، سفید فام تھا

07 نومبر 2017

نےو ےارک+ ٹوکیو(نےٹ نےوز+ آئی این پی) امریکہ میں ٹیکساس کے ایک چرچ میں سیاہ لباس اور بلٹ پروف جیکٹ میں ملبوس ایک مسلح سفید فام نوجوان کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والے 26 افراد کا سوگ منایا جا رہا ہے۔ ہلاک ہونے والوں میں پانچ سال سے 72 سال تک کی عمر کے افراد شامل میں۔ امریکہ کی جدید تاریخ میں قتل عام کے بدترین واقعہ کے پانچ ہفتے کے بعد فائرنگ کے ایک ایسے ہی واقعہ کے بعد صدر ٹرمپ نے کہا ہے کہ قوم’ تاریک ادوار‘ میں رہ رہی ہے۔ انہوں نے وہائٹ ہاو¿س اور سرکاری وفاقی عمارتوں پر قومی پرچم کو سرنگوں کرنے کے حکم دیا۔ میڈیا رپورٹوں کے مطابق یہ قتل عام امریکی فضائیہ کے ایک سابق اہلکار نے کیا ہے جسے اپنی بیوی اور بچے پر حملہ کرنے کے واقعہ کے بعد ایئر فورس سے نکال دیا گیا تھا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چرچ میں فائرنگ کرنےوالے حملہ آور کو نفسیاتی مریض قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ٹیکساس میں 26 افراد کی ہلاکت کا سبب بنے والے واقعہ کا ملک میں ہتھیاروں کے قوانین سے کوئی تعلق نہیں۔ جرمن سربراہ مملکت فرانک والٹر شٹائن مائر نے اسے خوف ناک پرتشدد کارروائی قرار دیا۔ ٹیکساس ڈیپارٹمنٹ پبلک سیفٹی کے ترجمان نے بتایا گھریلو تنازع لگتا ہے۔
ٹیکساس فائرنگ

a