مذہبی منافرت کیس ، دو ملزمان کو تین،تین ماہ قید اور دس،دس ہزار روپے جرمانہ

07 نومبر 2017

راولپنڈی (نیوزرپورٹر)انسداد دہشت گردی کی خصو صی عدالت کے جج محمد اصغر خان نے دہشت گردی کی دفعات کے تحت درج مختلف مقدمات کی سماعت ملتوی کردی ۔مذہبی منافرت پھیلانے کے ملزم کو سزا جبکہ بارود برآمد ہونے کے مقدمے میں ملوث ملزم کی ضمانت منظور کر لی ۔پیر کو ،انسداد دہشت گردی کی خصو صی عدالت کے جج اصغر خان نے مذہبی منافرت کیس میں دو ملزمان کو تین،تین ماہ قید اور دس،دس ہزار روپے جرمانے کی سزا سنا دی ہے۔کالعدم تنظیم کے کارکنوں ارشد اور عابد کو سی ٹی ڈی نے تاج کمپنی چوک لیاقت روڈ پر تنظیم کے پوسٹر لگاتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتار کر کے مقدمہ درج کیا تھا۔عدالت نے بارود برآمدگی کیس میں ملزم ڈاکٹر جاوید کی بعد از گرفتاری ضمانت منظور کرتے ہوئے ایک لاکھ کے مچلکے جمع کروانے کا حکم دے دیا ۔ملز م کے خلاف سی ٹی ڈی نے مقدمہ درج کیا تھا جس میں اس پر دھماکہ خیز مواد برآمد ہونے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔علاوہ ازیں عدالت نے تھانہ صدر چکوال کے کچہری فائرنگ قتل کیس میں ملزم غلام عباس کے خلاف 1گواہ کا بیان ریکارڈ کر کے سماعت 15 نومبر،ملزمان طیب شکیل وغیرہ کے خلاف تھانہ آر اے بازار کے مفتی امان اللہ کی ٹارگٹ کلنگ کے مقدمہ میں 2 گواہان کے بیان ریکارڈ کر کے سماعت11 نومبر جبکہ تھانہ صدر بیرونی کے چوکی انچار ج قتل کیس میں ملزم نوازش علی کے خلاف سماعت9 نومبر تک ملتوی کردی ۔