قتل کیس کے ملزم معمر خان کو ماتحت عدالت سے سنائی گئی سزائے موت ،عمر قیدمیں تبدیل

07 نومبر 2017

راولپنڈی (اپنے سٹاف رپورٹر سے)لاہور ہائیکورٹ راولپنڈی بنچ کے جناب جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی اور جناب جسٹس محمد طارق عباسی نے تھانہ صادق آباد قتل کیس میں ملزم کو ماتحت عدالت سے سنائی گئی سزائے موت عمر قید اور اے این ایف کے چرس برآمدگی کیس کے ملزم کی سزائے موت بھی عمر قید میں بدل دی تھانہ صادق آباد قتل کیس کے ملزم معمر خان کے وکیل راجہ غنیم عابر خان ایڈووکیٹ نےدلائل دیتے ہوئے کہا کہ ظہور اسلام صدیقی کو رقم کے لین دین کے تنازعے پر قتل کیا گیا جس کا مقدمہ پولیس نے درج کرکے ملزم کو گرفتار کیاتھا جسے ایڈیشنل سیشن جج راولپنڈی کی عدالت نے جرم ثابت ہونے پر سزائے موت سنائی تھی جبکہ ملزم سے پولیس ریکوری بھی نہیں کر سکی تھی اچانک جھگڑے میں یہ سانحہ ہوا جس پر عدالت عالیہ نے ملزم کی سزائے موت کالعدم قرار دے کر اسے عمر قید میں تبدیل کردیا جبکہ اے این ایف منشیات برآمدگی کیس کے ملزم عالم زیب کو 15 مئی2015 ء کو خصوصی عدالت سے ٹرک سے 180 کلو چرس اور ہیروئن برآمدگی پرسزائے موت سنا ئی تھی ملزم کے وکیل راجہ غنیم عابر خان ایڈووکیٹ نے دلائل دیتے ہوئے اپیل میں موقف اختیار کیا کہ وہ ٹرک ڈرائیور ہے اس کا اس منشیات سے تعلق نہ تھا فاضل وکیل نے کہا کہ ملزم کے خلاف ماضی میں ایسا کوئی ریکارڈ نہیں جس میں وہ منشیات کے دھندے میں ملوث پایا گیا ہو عدالت عالیہ نے ملزم کی سزائے موت ختم کرکے سزائے عمر قید میں تبدیل کردیا۔