احتساب کی وجہ سے الیکشن ملتوی نہیں کئے جانے چاہئیں: سراج الحق

07 نومبر 2017

لاہور (خصوصی نامہ نگار) امیر جماعت سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ جماعت اسلامی کا موقف ہے کہ احتساب اور انتخاب ایک ساتھ ہونا چاہیے۔ احتساب کی وجہ سے انتخابات ملتوی نہیں کیے جانے چاہئیں، ایسے اقدام سے حالات مزید خراب ہوں گے۔ انہوں نے یہ بات گوجرانوالہ ڈویژن کے ذمہ داران کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پاکستان دنیا میں واحد ملک ہے جس کا وزیر خزانہ ہے بھی اور نہیں بھی۔ وزیر خزانہ پر کرپشن کے سنگین الزامات ہیں اور احتساب عدالت میں ان کا مقدمہ چل رہاہے۔ عدالت میں پیش ہونے کی بجائے وہ ملک سے ہی فرار ہوگئے ہیں۔ اسحق ڈار کے تمام اعداد و شمار غلط ثابت ہوئے ہیں ان کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے ملکی معیشت کا بیڑا غرق ہوگیاہے، ملک میں مہنگائی کا طوفان برپا ہے۔ ہر چیز کی قیمتیں آسمان کو چھو رہی ہیں۔ ان کی پالیسیوں کی وجہ سے اگلے تین ماہ میں حکومت کو مشکلات سے دوچار ہونا پڑے گا۔ سراج الحق نے پٹرولیم کی قیمتوں میں اضافے کو عوام پر ڈرون حملہ قرار دیتے ہوئے مطالبہ کیاکہ یہ اضافہ بلاجواز ہے ، اسے فی الفور واپس لیا جائے۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ سیاست کو کرپشن سے پاک ہوناچاہیے۔ نیب زدہ سیاستدانوں کواس وقت تک سیاست میں نہیں آنا چاہیے جب تک عدالتوں میں ان کے کیس چل رہے ہیں وہاں سے انہیں کلین چٹ لے کر انتخابات میں حصہ لیناچاہیے۔ انہوں نے کہاکہ سیاسی پارٹیوں کا بھی فرض ہے کہ وہ ایسے لوگوں کو ٹکٹ دیں جن کا دامن مالی اور اخلاقی کرپشن سے صاف ہو اور وہ کسی سکینڈل میں ملوث نہ ہوں۔ ملک کا بچہ بچہ مقروض ہے اور اس قرض کی سودی اقساط ادا کرنے کے لیے مزید قرض لیا جارہاہے۔ زرمبادلہ کے ذخائر دن بدن کم ہورہے ہیں۔ بیرونی سرمایہ کاری نہ ہونے کے برابر ہے۔ نااہل وزیراعظم کی اپنی تمام دولت اور سرمایہ کاری بیرون ملک ہے انہیں عوام کا درد ہوتا تو اپنی دولت ملک میں لگاتے جس سے غریبوں کو روزگار کے مواقع میسر آتے۔ انہوں نے کہاکہ حقیقی جمہوریت اس وقت آئے گی جب عام آدمی پارلیمنٹ میں جائے گا۔

سراج الحق