پرچہ آئوٹ اسکینڈل کے باوجود جامعات کا این ٹی ایس پر بھرپور اعتماد

07 نومبر 2017

کراچی (نیوز رپورٹر) سندھ کے میڈیکل کالجوں میں داخلوں کیلئے این ٹی ایس ٹیسٹ کے پیپر آؤٹ ہونے کے اسکینڈل کی تحقیقات اگرچہ ابھی جاری ہے مگر جامعات کا این ٹی ایس پراب بھی بھرپور اعتماد ہے جس کا ثبوت یہ ہے کہ گزشتہ روز داؤد انجینئرنگ یونیورسٹی کے این ٹی ایس ٹیسٹ کے بعد جامعہ کراچی یونیورسٹی کی اکیڈمک کونسل نے بھی داخلہ ٹیسٹ این ٹی ایس سے کرانے کی منظوری دیدی جبکہ پہلی مرتبہ ہر کوٹے کیلئے ٹیسٹ پاس کرنا لازمی قرار دیدیا گیا۔ پیر کو وائس چانسلر ڈاکٹراجمل کی زیرصدارت ہونے والے اکیڈمک کونسل کے اجلاس میں داخلہ پالیسی پر اختلافات سامنے آ گئے‘ کئی اساتذہ کی جانب سے نہ صرف کمیٹیوں کے قیام پر اعتراض کیا گیا بلکہ شعبہ تاریخ عمومی کے سینئر پروفیسر ایس ایم طیبہ نے اختلافی نوٹ بھی تحریر کیا۔ پروفیسر ایم طیبہ نے اپنے نوٹ میں کہاکہ آن لائن پالیسی کو پہلے چھوٹے پیمانے پر ایم فل اور پی ایچ ڈی کے داخلوں پر شروع کرنا چاہئے تھا انہوں نے کہاکہ کمیٹی اکیڈمک کونسل سے منظوری کے بغیر بنائی گئی۔ انہوں نے کہاکہ داخلہ سافٹ ویئر کی خریداری قواعد کے برخلاف کی گئی ہے اس کیلئے ٹینڈر دیا جانا ضروری تھا۔ اکیڈمک کونسل کے اجلاس میں داخلہ پالیسی کی منظوری دیتے ہوئے آن لائن فارم جمع کرانے کے اقدامات کو سراہا گیا۔
این ٹی ایس/ اعتماد