سلمان مجاہد پر کرپشن کے نئے الزامات سامنے آ گئے

07 نومبر 2017

کراچی (وقائع نگار) قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 239 سے متحدہ کے ٹکٹ پر منتخب ہونے والے رکن اسمبلی سلمان مجاہد بلوچ پر کرپشن کے نئے الزامات سامنے آ گئے ہیں۔ بلدیہ غربی کے افسران سے بھاری فوائد حاصل کرنے کے حوالے سے پہلے ان پر 25 لاکھ روپے وصولی کا الزام لگایا گیا تھا اب سوشل میڈیا پر ان کے خلاف نئے الزامات کی بارش کر دی گئی ہے جس کے مطابق شاہنواز بھٹی ڈپٹی ڈائریکٹر ایس ڈبلیو ڈی ایم سی ویسٹ سلمان بلوچ کو ویگو پک اَپ کی ماہانہ اقساط ادا کرتا ہے۔ لطیف دہلی کالونی والا اس کے ہوٹل سے مفت میں اسٹاف اور پولیس گارڈز کا کھانا لیتے ہیں اور رقم کا تقاضا کرنے پر ایف آئی آر کٹوا دی۔ 10 سے 12 سینیٹری ورکرز اسٹاف کو اپنی ذاتی ملکیت میں رکھا ہوا ہے جبکہ ان کی تنخواہوں میں سے اپنا حصہ وصول کرتے ہیں‘ کئی ملازمین کو حبس بے جا میں رکھا ہوا ہے‘ ایک سینیٹری ورکر نے جب اپنی تنخواہ کا مطالبہ کیا تو اس کو شدید تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ تین سال سے ڈیڑھ لاکھ روپے ماہانہ آصف بیگ سے وصول کرتے رہے جب دینے سے منع کیا تو پوسٹنگ سے ہٹوا دیا‘ جب یہ دوبارہ پوسٹنگ پر آئے تھے تو سلمان مجاہد کے چہیتے اسٹاف کو غیر قانونی پٹرول کا کوٹہ نہ دینے پر فون پر دھمکیاں دی گئیں جو سوشل اور الیکٹرونک میڈیا پر موجود ہیں۔ اس کے علاوہ 8 مختلف حوالوں سے 21 لاکھ روپے سے زائد کی وصولی کی تفصیلات بھی سوشل میڈیا پر جاری کی گئی ہیں جس کے مطابق 5 لاکھ پی ایس او شکیل سے‘ 80 ہزار پرچیز آفیسر احمد بلوچ سے‘ 2 لاکھ روپے آفس سپرنٹنڈنٹ نفیس احمد سے شامل ہیں۔
الزامات/ بارش