کشمیر پر قبضہ

07 نومبر 2017

یہ نگری ہے جس کو یارو 

کشمیر کی وادی کہتے ہیں
یہاں مول نہیں انسانوں کا
بہتا ہے خون جوانوں کا
ہوتا ہے رقص شیطانوں کا
جہاں بچے سہمے رہتے ہیں
یہ نگری ہے جس کو یارو
کشمیر کی وادی کہتے ہیں
یہاں بہنیں عصمت کھوتی ہیں
اور بلک بلک کر روتی ہیں
بیٹوں کی موتیں ہوتی ہیں
ماؤں کے آنسو بہتے ہیں
یہ نگری ہے جس کو یارو
کشمیر کی وادی کہتے ہیں
کہتا ہے خون شہیدوں کا
دامن نہ چھوڑ اُمیدوں کا
یہ خطہ ہے یزیدوں کا
مظلوم تو ظلم سہتے ہیں
یہ نگری ہے جس کو یارو
کشمیر کی وادی کہتے ہیں
(چودھری عبدالخالق)