غیرقانونی ترقیاں نہ دینے پر ڈائریکٹر سیکنڈری اسکول کراچی کو دھمکیاں

07 نومبر 2017

کراچی(نیوز رپورٹر)محکمہ تعلیم میں غیر قانونی ترقیاں نہ کرنے پر ڈائریکٹر آف سیکنڈری اسکولز ایجوکیشن کراچی کو دھمکیاں دی گئی۔محکمہ تعلیم میں گریڈ17کی ترقیوں کے حوالے سے ہونے والی ڈیپارٹمنٹل کمیٹی کے اجلاس 4بار ملتوی ہوچکا ہے آخری بار اجلاس18اکتوبر کو طلب کیا گیا تھا تاہم 2012میں بھرتی اساتذہ کے احتجاج اور پولیس لاٹھی چارج کے باعث سیکریٹری تعلیم عزیزعقیلی میٹنگ چھوڑ کر پریس کلب پہنچ گئے تھے۔ذرائع کا کہنا تھا کہ ڈی پی سی میں بھیجے جانے والوں میں کئی افرادکے نام غیر قانونی طور پر ڈالے گئے تھے۔ ڈائریکٹر آف سیکنڈری اسکولز ایجوکیشن کراچی حامد کریم نے ان کے نام نکال دئیے تھے۔بعدازاں جن افسران کے نام نکالے گئے ان کی جانب سے ڈائریکٹر آف سیکنڈری اسکولز ایجوکیشن کراچی کو دھمکیاں دی گئی تھی۔اس حوالے سے ایک کمیٹی بھی تشکیل دے دی گئی ہے۔جوکہ تحقیقات کر کے سیکریٹری تعلیم اقبال درانی کو رپورٹ پیش کرے گی ۔گورنمنٹ اورینٹل عربک ٹیچرز ایسوسی ایشن کراچی کے رہنمائوں علامہ غلام حسن لغاری نے ڈائریکٹر آف سیکنڈری اسکولز ایجوکیشن کراچی حامدکریم کو چند بلیک میلر عناصرکی جانب سے غیر قانونی اور مذموم مقاصدکی تکمیل کے لیے دبائو ڈالنے کی شدید مذمت کی ہے۔تعلیم بچائو ایکشن کمیٹی کے کنونئیرانیس الرحمن کا کہنا ہے کہ ایک مخصوص ٹولہ حامد کریم پر دبائو ڈال رہا ہے وزیر تعلیم ،سیکریٹری تعلیم سے مطالبہ ہے کہ ان عناصر کیخلاف کارروائی کریں۔