غیرمعیاری نصابی کتب کی اشاعت کی روک تھام کیلئے پراونشنل ریویو کمیٹی کا قیام

07 جولائی 2013

لاہور(سٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے غیرمعیاری نصابی کتب کی اشاعت کا تدارک کرنے کےلئے پراونشل ریویو کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔ صوبائی وزیرتعلیم کی سربراہی میں بنائی گئی یہ کمیٹی حتمی فیصلہ کرنے کی مجاز ہو گی ۔ بات گزشتہ روز صوبائی وزیر تعلیم، سیاحت،کھیل و امور نوجوانان رانا مشہود احمد خاںنے پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ اور پنجاب کری کلم اتھارٹی کے مشترکہ اجلاس سے خطاب میں بتائی۔ چیئرمین پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ نوازش علی اور چیئرمین پنجاب کری کلم اتھارٹی سلیم اختر کیانی کے علاوہ بورڈ آف ڈائریکٹرز کے ارکان اور ماہرین مضامین نے اجلاس میں شرکت کی۔ رانا مشہود احمد خان نے بتایا کہ پراونشل ریویو اتھارٹی اعلیٰ صلاحیتوں کے حامل سکالرز پر مشتمل کمیٹی ہو گی جو آزادانہ طور پر کام کرے گی اور نصابی کتابوں کے معیار کے بارے میں فیصلہ کرے گی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ اس سال پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ نے 3 کروڑ86 لاکھ 57 ہزار نصابی کتابیں شائع کی ہیں۔بعض وجوہات کی بنا پر کتابوں کی اشاعت میں کچھ تاخیر ہوئی جبکہ 42 لاکھ کتابیں اب بھی ضرورت سے کم ہیں ۔ رانا مشہود احمد خان نے حکم دیا کہ جو پرائیویٹ پبلشرز کتابوں کی اشاعت میں تاخیر کا باعث بنے ہیں، انہیں بلیک لسٹ کردیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ جن نصابی کاتوں میں پاکستان اور اسلام کے بارے میں متنازعہ معلومات دی گئی ہیں‘ ان کے پبلشرز اور این او سی جاری کرنے والے افسران کے خلاف قابل دست اندازی پولیس قوانین کے تحت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ دریں اثنا صوبائی وزیرتعلیم رانا مشہود احمد خان نے آل پاکستان پرائیویٹ سکولز مینجمنٹ ایسوسی ایشن کے زیراہتمام منعقدہ تعلیمی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لاعلمی و پسماندگی ترقی پذیر ممالک کی خوشحالی میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔ سرکاری سکولوں کی بہتری کیلئے بجٹ میں 8 ارب مختص کر دیئے گئے ہیں۔ آئندہ سال پنجاب کے پانچ سال سے نو سال تک کے تمام بچوں کو سرکاری سکولوں میں داخل کر دیا جائے گا۔ فروغ تعلیم کے حوالے سے پرائیویٹ سکولز کا کردار لائق تحسین ہے۔ آل پاکستان پرائیویٹ سکولز مینجمنٹ ایسوسی ایشن کے مرکزی صدر ادیب جاودانی نے کہا کہ پنجاب حکومت کی طرف سے نجی سکولوں پر دس فیصد بچوں کو پڑھانے کی ذمہ داری بہت بڑی زیادتی ہوگی کیونکہ وفاقی اور پنجاب حکومت نے نجی تعلیمی اداروں پر 18 فیصد سے زائد ٹیکسز عائد کر رکھے ہیں۔ تعلیمی کانفرنس سے سید ذاکر حسین شاہ‘ رانا مقرب الٰہی‘ خالد پرویز‘ میاں محمود احمد‘ نیئر صدف‘ ملک افتخار حسین‘ حسنین گیلانی اور جاوید انجم نے بھی خطاب کیا۔