بجلی منصوبوں میں تاخیر ماضی کے حکمرانوں کے لالچ اور بدعنوانی سے ہوئی : شہباز شریف

07 جولائی 2013

لاہور (خصوصی رپورٹر) وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ چینی وزیراعظم سے وزیراعظم محمد نوازشریف کی ملاقات اپنے نتائج کے اعتبار سے تاریخی حیثیت رکھتی ہے۔ بیجنگ میں پاکستانی شہریوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دونوں رہنماﺅں کی ملاقات کے دوران پاکستان میں انرجی کے بحران کے خاتمے کے لئے باہمی تعاون پر مبنی کئی اہم فیصلے کئے گئے تاہم اس ملاقات کا سب سے اہم فیصلہ کاشغر سے گوادر تک 2 ہزار کلومیٹر طویل شاہراہ کی تعمیر ہے جسے ”اکنامک کوریڈور“ کا نام دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ شاہراہ پاکستان کی ہتھیلی پر قسمت کی روشن لکیر ثابت ہو گی۔ پوری پاکستانی قوم اس منصوبے پر چینی قیادت کی شکرگزار ہے۔ میں سمجھتا ہوں کہ تاریخ میں پہلی مرتبہ پاک چینی دوستی کا اتنا بڑا عملی مظاہرہ دیکھنے میں آئے گا۔ اس منصوبے کا اجرا خطے میں معاشی انقلاب کا پیش خیمہ ثابت ہو گا۔ پاکستان میں کم از کم 35 صنعتوں کو فروغ ملے گا اور لاکھوں ہنرمند اور غیر ہنرمند افراد کے لئے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ قبل ازیں محمد شہباز شریف نے انرجی کی پیداوار سے متعلق مختلف چینی کمپنیوں کے سربراہوں سے ملاقات کے دوران کہا کہ پاکستان میں مسلم لیگ (ن) کی حکومت کے قیام کے بعد قومی اہمیت کے منصوبوں کے بارے میں غیر سنجیدہ روئیے کا خاتمہ ہو چکا ہے۔ اس ضمن میں نیلم جہلم پراجیکٹ اور نندی پور پاور پلانٹ کی مثالیں ہمارے سامنے ہیں۔ ان دونوں منصوبوں پر ہونے والی افسوس ناک تاخیر نے پاکستان کو اربوں روپے کا نقصان پہنچایا لیکن اب ان دونوں منصوبوں کی تکمیل کے سفر کا آغاز تیزی سے کر دیا گیا ہے۔ نندی پور پاور پراجیکٹ کے ساتھ جو کچھ ہوا وہ ایک دردناک داستان ہے لیکن اب ہم نے اپنی کوششوں کے ذریعے اسے خوبصورت موڑ دے دیا ہے۔ بعدازاں شنگھائی پہنچنے کے بعد پاکستانی سفارتخانے کے زیر اہتمام منعقد ہونے والے اکنامک فورم سے خطاب کرتے ہوئے محمد شہباز شریف نے کہا کہ پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے والے چینی سرمایہ کاروں کی میزبانی میں خود کروں گا۔ آپ پاکستان آئیں میں آپ کی خدمت کے لئے 24 گھنٹے حاضر ہوں گا۔ آپ مجھے 2 بجے رات کو بھی جگائیں تو میں جاگوں گا۔ شہباز شریف نے کہا کہ ماضی میں بجلی کے منصوبوں میں جو تاخیر ہوئی اس کے پیچھے ماضی کے حکمرانوں کا لالچ اور بدعنوانی کارفرما تھی۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت سولرونڈ اور متبادل توانائی کے دیگر متبادل ذرائع میں چینی سرمایہ کاری کی حوصلہ افزائی کرے گی۔
شہباز شریف