وزیراعلیٰ موگے کے پانی کا مسئلہ حل کرائیں

07 جولائی 2013

مکرمی! میں نے 2003ءمیں گوجرانوالہ ایکسیئن انہار کے نام کہ درخواست گزاری میرا رقبہ موگہ نمبر 115439 سے موگہ نمبر 3356/L پر تبدیل کر دیاجائے 2006ءمیں ایسا کر دیا گیا اور یہ ایس سی سرکل لاہور نے کنفرم بھی کر دیا۔ 2007ء میں میری نہری وارہ بندی زیر دفعہ 68 بھی ایس ڈی او راجباہ سادھوکے نے پاس کردی اور میں نے پولیس امداد کے ذریعے پانی بھی لگایا۔اس کے بعد ساتھ کی زمین کے مالک نے ایکسیئن گوجرانوالہ عبدالستار نیازی کے پاس نہری واہ بندی کے خلاف اپیل کی جو کہ خارج ہو گئی۔ اس زمیندار نے میرانکہ توڑ کر سول کورٹ سے سٹے لے لیا ۔سیشن جج گوجرانوالہ نے فیصلہ میں واضح حکم جاری کیا کہ دونوں فریقوں کو پانی دیا جائے میں نے پھر پانی لگایا لیکن موصوف نے پھر میرانکہ توڑ کر میرا پانی بند کر دیا۔ میں نے نکہ کے بارے میں ایس سی سرکل لاہور کودرخواست دی تو انہوں نے کہا کہ نکہ کا مسئلہ حل کرو۔ لیکن محکمہ انہار گوجرانوالہ کے عملہ نے مجھے پھر پانی نہ لگوایا بلکہ دوبارہ رقبہ کے بارے میں سماعت شروع کر دی۔ محکمہ انہار گوجرانوالہ کا عملہ نہ عدالت کا احترام کرتا ہے اور نہ ہی اپنے اعلیٰ افسران کا حکم مانتا ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب، گورنر پنجاب، وزیر آبپاشی لاہور سے گزارش ہے کہ کسی اعلیٰ نیک اور دیانت دار افسر سے انکوائری کروائی جائے اور مجھے موگہ نمبر 3356/L سے نہری پانی لگانے کا انتظام کیا جائے۔ (محمد اسلم نزد سول ہسپتال کامونکے تحصیل کامونکے ضلع گوجرانوالہ فون: 0301-6625310)