ایٹمی تنصیبات کی جاسوسی پر ملک بدر امریکی دوبارہ آمد پر گرفتار‘ اسلام آباد ائرپورٹ کا عملہ معطل

07 اگست 2016

اسلام آباد (خبرنگار خصوصی+ نوائے وقت رپورٹ) حکومت نے ایٹمی تنصیبات کی جاسوسی پر بلیک لسٹ قرار دئیے گئے امریکی شہری کو اسلام آباد ائیرپورٹ پر گرفتار کرلیا اور ایف آئی اے نے اسکی تحقیقات شروع کردیں۔ امریکی شہری میتھیو نے اسلام آباد ائرپورٹ لینڈنگ کے بعد لینڈنگ کارڈ پر غلط کوائف درج کرکے امیگریشن حکام کو دھوکہ دینے کی کوشش کی جس پر ایف آئی اے نے فوری طور پر اس امریکی کو گرفتار کرکے امیگریشن سیل منتقل کردیا ہے۔ ائرپورٹ سے کلیئر کرنے والے ایف آئی اے کے ملازم باپ بیٹے کیخلاف بھی مقدمہ درج کرلیا گیا ہے ان اہلکاروں میں سب انسپکٹر راجہ آصف اور احتشام الحق شامل ہیں۔ ان دونوں اہلکاروں کی غفلت کی وجہ سے یہ امریکی پاکستان میں داخل ہوا میتھیو کو 2011ءمیں بلیک لسٹ کرکے پاکستان سے نکال دیا گیا تھا اور بلیک لسٹ ہونے کے باوجود امریکی ریاست ہوسٹن کے پاکستانی قونصل خانے سے اسے ویزا جاری کیا گیا۔ ایف آئی اے نے ویزا جاری کرنے والی خاتون آفیسر کو بھی مقدمے میں نامزد کرلیا ہے۔ وزیرِداخلہ چودھری نثار نے بلیک لسٹ پر موجود ایک امریکی شہری کو امیگریشن کی اجازت دینے کے واقعہ کا سخت نوٹس لیتے ہوئے اسلام آباد ائیرپورٹ پر تعینات ایف آئی اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر سمیت امیگریشن کا شفٹ عملہ معطل کر دیا ہے۔ میتھیو بریٹ نامی امریکی شہری ہفتہ کی صبح اسلام آباد ائر پورٹ پہنچا۔ مذکورہ شخص کوکچھ سال قبل مشکوک سرگرمیوں میںملوث ہونے کی بنیاد پر بلیک لسٹ کرتے ہوئے ملک بدر کر دیا گیا تھا۔ ائیر پورٹ پر موجود امیگریشن حکام نے غفلت کا مظاہرہ کرتے ہوئے اسے امیگریشن کی اجازت دیتے ہوئے پاکستان داخل ہونے کی اجازت دےدی۔ امیگریشن ڈیسک پر موجود دو نوں ایف آئی اے اہلکاروں کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ ائیر پورٹ پر تعینات ایف آئی اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر معطل جبکہ متعلقہ ڈپٹی ڈائریکٹر اور امیگریشن ڈائریکٹر سے جواب طلبی کی گئی ہے۔ امریکی شہری میتھیو بریٹ جو ائیر پورٹ سے نکلنے میں کامیاب ہو گیا تھا اسے اسلام آباد کے سیکٹر جی ایٹ ون کے ایک گیسٹ ہاﺅس سے گرفتار کر لیا گیا اور امیگریشن قواعد کی خلاف ورزی کرنے پر ا س کے خلاف مقدمے کا باقاعدہ اندراج کر لیا گیا ہے۔ وزیرِداخلہ نے وزارتِ داخلہ کے اعلیٰ حکام کو ہدایت کی ہے کہ وہ معاملے کی مکمل انکوائری کریں اور اس بات کا پتہ لگائیں آیا بلیک لسٹ پر موجودامریکی شہری کو محض غفلت کی وجہ سے امیگریشن کی اجازت دی گئی یا اس کے پیچھے کوئی اور وجہ تھی۔وزیرِداخلہ نے حکام کو ہدایت کی سرکاری تعطیل کے باوجودواقعے کی مکمل انکوائری رپورٹ آئندہ چوبیس گھنٹوں میں پیش کی جائے۔ انکوائری کے لئے وزارتِ داخلہ کے ایڈیشنل سیکریٹری کی زیر نگرانی ٹیم تشکیل دی جا چکی ہے۔ وزیرِداخلہ نے تفتیش کےلئے جے آئی ٹی کی تشکیل کی بھی ہدایت کی۔ ایس پی انویسٹی گیشن کیپٹن (ر) الیاس کی سربراہی میں جے آئی ٹی ایف آئی اے، آئی بی اور آئی ایس آئی کے افسران پر مشتمل ہوگی۔ مذکورہ شخص کو چند برس پہلے پاکستانی نیوکلیئر تنصیبات کی جاسوسی پر گرفتار کیا گیا اور مشکوک سرگرمیوںاور پاکستانی قوانین کی خلاف ورزی کا مرتکب ہونے کی بنیاد پر اسے ملک بدرکر دیا گیا تھا۔ نوائے وقت رپورٹ کے مطابق ایف آئی اے نے میتھیو کا تین روزہ جسمانی ریمانڈ حاصل کر لیا۔ امریکی سفارخانے نے امریکی شہری میتھیو کی گرفتاری پر بیان میں کہا ہے کسی امریکی کی مضری کے بغیر اس کی معلومات نہیں دے سکتے۔ امریکہ کا پرائیویسی ایکٹ ہمیں ایسی معلومات دینے سے روکتا ہے۔
امریکی گرفتار