پاکستان‘ ایران کا دہشت گردی‘ داعش جیسے خطرات سے نمٹنے کیلئے تعاون بڑھانے پر اتفاق

07 اگست 2016

تہران (نوائے وقت رپورٹ+ نیوز ایجنسیاں) دفتر خارجہ کے مطابق پاکستان ایران کے درمیان سیاسی مشاورت کا 9 واں دور تہران میں ہوا۔ پاکستانی وفد کی قیادت سیکرٹری خارجہ اعزاز چودھری نے کی۔ سیاست‘ تجارت‘ اقتصادی تعاون اور سکیورٹی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ پاکستان اور ایران نے دہشت گردی اور داعش جیسی تنظیموں کے خطرات سے نمٹنے کیلئے دوطرفہ تعاون بڑھانے پر اتفاق کیا ہے۔ دونوں ملکوں نے سیاست ، تجارت ، معاشی تعاون اور سکیورٹی سمیت باہمی دلچسپی کے شعبوں میں تعاون کے فروغ کی ضرورت پر بھی زور دیا۔ ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق مذاکرات میں پاکستانی وفد کی قیادت سیکرٹری خارجہ اعزاز احمد چوہدری نے کی جبکہ ایرانی وفد نائب وزیر خارجہ برائے ایشیا پیسفک ابراہیم رحیم پور کی قیادت میں شریک ہوا۔ بات چیت کے دوران علاقائی صورتحال کے ساتھ ساتھ ٹرانزٹ ٹریڈ کیلئے رابطوں کے فروغ کیلئے مواقع بھی زیر غور آئے۔ دونوں ملکوں کے وفود نے اس بات پر اتفاق کیا کہ انتہاپسندی اور دہشت گردی کے خاتمے خاص طور پر داعش جیسی تنظیموں نے نمٹنے کیلئے پاکستان اور ایران کے درمیان قریبی تعاون لازمی ہے۔ سیکرٹری خارجہ اعزاز احمد چودھری نے بعد ازاں ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف سے ملاقات بھی کی ۔ سیکرٹری خارجہ اعزاز احمد چوہدری نے اپنے ایرانی ہم منصب کو مقبوضہ کشمیر کی تازہ ترین صورتحال سے آگاہ کیا ۔ ایرانی خبررساں ادارے کے مطابق جواد ظریف نے کہا کہ اقتصادی تعلقات میں توسیع کے لئے بینکنگ کے شعبے میں بھی تعاون کا فروغ ضروری ہے۔ ایران کے وزیرخارجہ نے بھی دہشت گردی اور انتہا پسندی کا مقابلہ کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے داعش اور القاعدہ کو علاقے میں دونوں ملکوں کا مشترکہ دشمن قرار دیا۔
پاکستان/ ایران