کرپشن کیخلاف وکلاءعدلیہ بحالی کی طرح بڑی تحریک چلائیں گے: رشید رضوی

06 نومبر 2016

کراچی(وقائع نگار)سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے نو منتخب صدر رشید اے رضوی نے کہا ہے کہ کرپشن ملک کا سب سے بڑا مسئلہ ہے، انہوں نے عدلیہ بحالی تحریک کے انداز میں کرپشن کیخلاف سول سوسائٹی ، صحافیوں اور مزدوروں کے ساتھ مل کر بڑی تحریک شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہاکہ پانامہ پیپرز کمیشن کو اسی معاملے تک محدود رہنا چاہیئے ورنہ اس کا فیصلہ برسوں تک نہیں آئے گا،عدلیہ اس وقت آزاد ہو گی جب عام آدمی کو عدالتوں سے انصاف اور ریلیف ملے گا۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے ہفتہ کو کراچی پریس کلب میں میٹ دی پریس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔رشید اے رضوی نے کہا کہ عام آدمی کو ریلیف دینے کیلئے حکومتیں اور ادارے کچھ نہیں کرتے ، بڑے منصوبے اور پروجیکٹ حکوت کی ترجیحات میں شامل ہیں کیوں کہ اس سے انہیں بڑے کمیشن مل جاتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ صدر ، وزیر اعظم ، جج ، صحافی کسی کیخلاف کچھ بھی لکھ دیا جائے کوئی فرق نہیں پڑتا لیکن صرف ایک خبر سے ملکی سلامتی اور ملک خطرے میں پڑ جاتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ میں ایک عام آدمی ہوں اور عام آدمی کیلئے ہر فورم پر جدوجہد کروں گا۔ رشید اے رضوی نے کہا کہ ملک میں تعلیمی اداروں ، اسپتالوں کا برا حال ہے لیکن کوئی حکومت کچھ نہیں کرتی۔ انہوں نے کہا کہ کوئٹہ کے سانحے میں ہلاکتوں کی تعداد صرف اس لئے بڑھی کہ بنیادی سہولیات ہی موجود نہیں تھیں۔ رشید اے رضوی نے کہا کہ سول سوسائٹی ، مزدور ِ صحافی مل کر کرپشن سے نجات کیلئے تحریک چلائیں گے اور ملک کو ایک کرپشن فری سوسائٹی بنائیں گے ۔انہوں نے ریٹائرڈ ججوں پر مشتمل عبوری حکومت کی تجویز کو رد کرتے ہوئے کہا کہ آئیں میں اس کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریٹائرڈ جج اور جنرلز کا ایک مائنڈ سیٹ ہوتا ہے ، انہیں نہ سیاست میں آنا چاہیئے اور نہ حکومت کا حصہ بننا چاہیئے ۔صدر سپریم کورٹ بار نے کہا کہ میں نے اسی لئے سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری کی جانب سے سیاسی جاعت بنانے مخالفت کی تھی۔ انہوں نے صحافیوں کو آزادی صحافت اور آزاد عدلیہ کیلئے جدوجہد پر مبارکباد پیش کی اور صحافیوں کو کسی بھی قانونی معاونت کیلئے اپنے تعاون کا بھی یقین دلایا ۔اس سے پہلے کراچی پریس کلب کے صدر فاضل جمیلی اور سیکرٹری اے ایچ خانزادہ نے رشید اے رضوی کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا، اور سریم کورٹ بار کا صدر منتخب ہونے پر انہیں مبارکباد بھی دی۔