تعلقات معمول پر نہیں آئے، اوباما کی ایران کیخلاف ہنگامی صورتحال کی مدت میں توسیع

06 نومبر 2016

واشنگٹن (اے پی پی) امریکی صدر بارک اوباما نے امریکی ایوان نمائندگان کے سپیکر کو ایک خط میں لکھا ہے کہ امریکہ اور ایران کے تعلقات ابھی معمول پر نہیں آئے ہیں اس لئے ایران کے خلاف قومی ہنگامی صورتحال کا جاری رہنا ضروری ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق بارک اوباما کے اس فیصلے کی بنیاد پر ایران کے خلاف قومی ہنگامی صورتحال کی مدت میں مزید ایک سال تک توسیع کردی گئی ہے-اوباما نے گذشتہ سال 8نومبر کو اس قانون کی مدت میں توسیع کی تھی ۔واضح رہے کہ رواں سال جون کے مہینے میں امریکہ کے 75 سے زائد سیاستدانوں اور سفارتکاروں نے اوباما کے نام ایک مراسلے میںایران کے ساتھ تعلقات بہتر بنانے کا مطالبہ کیا تھا۔ہنگامی صورت حال کے قانون سے امریکی صدر کویہ اختیارحاصل ہوتا ہے کہ وہ امریکہ کی قومی سلامتی کے لئے اقتصادی اورخارجہ پالیسی کو درپیش غیرمعمولی خطرات کا مقابلہ کرنے کے لئے پابندیوں سمیت دوسرے تمام اقدامات کرسکتا ہے۔ ادھر امریکی کانگریس میں معروف ریپبلکن سینیٹر جان مک کین نے کہاہے ایران کے ساتھ جوہری معاہدے کے خطرناک نتائج برآمد ہوں گے ۔