پاکستان کی آبادی 19 کروڑ 40 لاکھ‘ عورتوں کی تعداد مردوں سے کم ہوگئی

06 نومبر 2016

پشاور (آن لائن) پاکستان میں مردوں کے مقابلے میں عورتوں کی تعداد کم ہو گئی فاٹا چاروں صوبوں ، وفاقی دارلحکومت میں بھی مردوں کی تعداد عورتوں سے بیس فیصد زیادہ ہیں ۔ ماضی میں پاکستانی عورتوں کی تعدادمردوںسے زیادہ تھیں تاہم پاکستان انٹرنیشنل انسٹیوٹ آف پاپولیشن سٹیڈیز کی جانب سے پاکستان کی آبادی میں اضافے کی سالانہ شرح کے مطابق یکم جولائی 2016ء کو پاکستان کی آبادی 19 کروڑ 39 لاکھ 99 ہزار 28 نفوس پرمشتمل ہیں اور 1998ء کی مردم شماری کے مطابق ملک کی آبادی 13 کروڑ 23 لاکھ 51 ہزار 279 نفوس پر مشتمل تھی۔ 17 سال کے دوران پاکستان کی آبادی 6 کروڑ 15 لاکھ 67 ہزار 694 افرادکا اضافہ ہوا۔ خیبر پی کے کی مجموعی آبادی 2 کروڑ 59 لاکھ 97 ہزار 636 افراد پر مشتمل ہے جس میں ایک کروڑ 33 لاکھ 16 ہزار 928 مرد جبکہ عورتوں کی تعداد ایک کروڑ 26 لاکھ 80 ہزار 708 بتائی گئی ہے جبکہ فاٹا کی مجموعی آبادی 46 لاکھ 53 ہزار 897 ہیں جس میں 24 لاکھ 20 ہزار 546 مرد اور 22 لاکھ 33 ہزار 351 عورتیں ہیں۔ پنجاب کی آبادی 10 کروڑ 78 لاکھ 68 ہزار افراد پر مشتمل ہے جس میں 5 کروڑ 58 لاکھ 15 ہزار 109 مرد اور 5 کروڑ 20 لاکھ 53 ہزار 341 عورتیں شامل ہیں۔ سندھ کی مجموعی آبادی 4 کروڑ 45 لاکھ 99 ہزار 926 افراد پر مشتمل ہیں جس میں 2 کروڑ 35 لاکھ 85 ہزار مرد اور 2 کروڑ 10 لاکھ 14 ہزار خواتین پر مشتمل ہیں۔ بلوچستان کی آبادی 96 لاکھ 20 ہزار افراد پر مشتمل ہے جس میں 51 لاکھ 37 ہزار مرد اور 44 لاکھ 82 ہزار خواتین شامل ہیں جبکہ وفاقی دارالحکومت کی مجموعی آبادی 11 لاکھ 79 ہزار 814 افراد پر مشتمل ہے جس میں 6 لاکھ 36 ہزار 238 مرد جبکہ 5 لاکھ 43 ہزار 576 خواتین شامل ہیں ۔ مجموعی آبادی میں مردوں کی تعداد 10 کروڑ 9 لاکھ 12 ہزار 356 جبکہ عورتوں کی تعداد 9 کروڑ 30 لاکھ 7 ہزار 573 بتائی گئی ہے۔