زہر آلود دھند جاری، ٹریفک حادثات میں میاں بیوی سمیت 8افراد جاں بحق

06 نومبر 2016

لاہور /فیصل آباد /ملتان / شیخوپورہ / گوجرانوالہ/ قصور (این این آئی+ نمائندہ خصوصی+ نامہ نگاران) لاہور سمیت پنجاب کے مختلف شہروں میں آلودہ دھند کا راج برقرار ہے جبکہ ٹریفک حادثات میں میاں بیوی سمیت 8 افراد جاں بحق، درجنوں زخمی ہو گئے۔ کئی مقامات پر حد نگاہ صفر ہونے کے باعث موٹر وے کے مختلف سیکشن ٹریفک کے لئے بند کر دیئے گئے جبکہ دھند کے باعث پروازوں اور ٹرینوں کا شیڈول بھی شدید متاثر ہو رہا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق لاہور سمیت پنجاب کے متعدد شہروں میں دھند اور سموگ کا راج ہفتہ کے روز بھی برقرار رہا۔ ہر طرف چھائے دھوئیں کے بادلوں نے ہر چیز کو چھپا ئے رکھا، حد نگاہ نہ ہونے کے برابر رہی جس کی وجہ سے شہریوں کو بھی شدید مشکلات کا سامنا رہا۔ موٹر وے ذرائع کے مطابق لاہور سے سیال موڑتک، موٹروے ایم تھری پنڈی بھٹیاں سے فیصل آباد تک اور موٹروے ایم فور فیصل آباد سے گوجرہ، شورکوٹ سیکشن تک بند کر دی گئی۔ ترجمان موٹر وے کا کہنا ہے کہ شہری دھند میں غیر ضروری سفر سے پرہیز کریں اور فوگ لائٹس کا استعمال کریں۔ لاہور اور اس کے مضافاتی علاقے چار روز سے مسلسل سموگ کی لپیٹ میں ہیں جس کے باعث پروازیں اور ٹرینیں بھی تاخیر کا شکار ہو رہی ہیں۔ لاہور سے خانیوال تک بھی شدید دھند کا راج رہا اور حد نگاہ 50 سے 150 میٹر کے درمیان رہی۔ حافظ آباد، کوٹ مومن، مانگا منڈی، اوکاڑہ اور چنیوٹ میں بھی شدید دھند کا راج رہا اور سردی کی شدت میں بھی اضافہ ہو گیا۔ نیشنل ہائی وے پر پتوکی، ساہیوال،خانیوال میں بھی حدنگاہ انتہائی کم ہونے پرٹریفک کی روانی سست روی کا شکار رہی۔ سموگ کے باعث ملتان میں حد نگاہ چھ سو میٹر ہوگئی ہے جس کے باعث تھل جیب ریلی تاخیر کا شکار ہوگئی۔ فیصل آباد میں بھی سموگ کے باعث شہریوں کو آمدورفت میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ چار روز سے ہونے والی زہریلی دھند کے باعث شہری ناک، کان اور گلے کے انفیکشن میں مبتلا ہو رہے ہیں۔ محکمہ موسمیات نے آئندہ چوبیس گھنٹے میں ملک کے بیشتر علاقوں میں خشک موسم کی پیشگوئی کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب کے میدانی علاقوں میں گرد آلود دھند کا سلسلہ مزید ایک ہفتے جاری رہنے کا امکان ہے۔ آئندہ چوبیس گھنٹے میں کشمیر اور گلگت بلتستان میں بارش اور بلند و بالا پہاڑوں پر برفباری کا امکان ہے۔ علاوہ ازیں چکوال کے نواحی علاقے دھرابی میں ٹریکٹر ٹرالی الٹنے سے 2خواتین جاں بحق اور 12افراد زخمی ہو گئے۔ پولیس حکام کا کہنا ہے کہ حادثہ تیز رفتاری اور دھند کے باعث پیش آیا۔ میاں چنوں کے نواحی گاﺅں 46پندرہ ایل کا رہائشی غلام دستگیر اپنے والد کو بس سٹینڈ پر چھوڑ کر واپس آرہا تھا کہ شدید دھند کے باعث موٹر سائیکل کھڈے میں گرنے سے نوجوان نہر15ایل میں گر کر ڈوب گیا۔ ریسکیو 1122 نے نوجوان کی نعش کو نہر سے تلاش کر کے ورثاءکے حوالے کردیا۔ پاکپتن سے نامہ نگار کے مطابق سکندر چوک کے رہائشی نور سکندر کا سوتیلا بیٹا عمر فاروق اپنی بیوی عابدہ کے ہمراہ کار پر جا رہا تھا۔ تیز رفتاری کے باعث مزدا بے قابو ہو کر کار میں ٹکرا گیا جس سے عمر فاروق اور عابدہ بی بی موقع پر ہی جاں بحق ہو گئے، مزدا ڈرائیور فرار ہو گیا۔ گوجرانوالہ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق گوجرانوالہ مےں علی الصبح آلود سموگ کے باعث لوگوں کو ڈرائےونگ کرنے مےں بے حد مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، دھند کے باعث قاضی کوٹ مےں موٹر سائےکل تےز رفتاری کے باعث ٹرک کے ساتھ ٹکرا گئی جسکے نتےجے مےں شدےد زخمی ہونےوالا نامعلوم موٹر سائےکل سوار موقع پر ہی زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گےا، اسی طرح کامونکی ٹول پلازہ، اوجلہ پل ، حافظ آباد روڈ، بٹرانوالی اور علی پور روڈ پر بھی ٹرےفک کے حادثات ہو ئے، ان حادثات کا شکار ہونےوالے عزےر، وقاص، نسےم، عمران، مستنصر، لےاقت، نوےد اور طارق و غےرہ کو طبی امداد کی فراہمی کےلئے ہسپتال داخل کر وا دےا گےا۔ گگو منڈی سے نامہ نگار کے مطابق گگومنڈی شہر اور گرد و نواح کو شدید دھند نے اپنی لپیٹ میں لے لیا جس سے آنکھوں میں چبھن شروع ہو گئی، ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو گیا اور طلباءو طالبات کو سکول پہنچنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ پتوکی اور قصور سے نامہ نگار کے مطابق پتوکی کے نواحی ٹول پلازہ ملتان روڈ کے نزدیک دو تیز رفتار مسافر بسیں آمنے سامنے آپس میں ٹکرا گئیں جس کے باعث ایک طالب علم شان جاں بحق جبکہ پندرہ مسافر شدید زخمی ہو گئے۔ حادثہ پر طلباءاور اہل علاقہ نے احتجاج کیا اور سڑک بلاک کر دی۔ فرید ایکسپریس لاہور سے قصور آ رہی تھی کہ راجہ جنگ کے نزدیک رحمت علی سڑک کراس کرتے ہوئے دھند کی وجہ سے ٹرین کو نہ دیکھ سکا اور ٹرین تلے آ کر کچلا گیا اور موقع پر جاں بحق ہو گیا۔ ہڑپہ سے نامہ نگار کے مطابق چیچہ وطنی کا رہائشی موٹر سائیکل سوار شاہد رشید دھند کے باعث ٹرک سے جا ٹکرایا جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہو گیا۔ اسے تشویشناک حالت میں ہسپتال شفٹ کر دیا گیا۔ چیچہ وطنی سے نامہ نگار کے مطابق دھند کے باعث تھانہ کسووال پولیس وین بائی پاس پر فٹ پاتھ سے ٹکرا کر الٹ گئی جس سے چار پولیس ملازمین ڈرائیور محمد اکرم، سب انسپکٹر سکند اور کانسٹیبلان نسیم عباس اور فہیم زخمی ہو گئے جنہیں تحصیل ہسپتال سے طبی امداد فراہم کر دی گئی۔