نوازشریف کو ایک اور موقع دینا چاہتا ہوں چاچا عمران کی نیت صاف ہو تو ملکر کام کرسکتا ہوں بلاول بھٹو

06 نومبر 2016

اوباڑو (نامہ نگار+ نیوز ایجنسیاں) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ اگر پیپلز پارٹی کے چار مطالبات نہ مانے گئے تو پھر شیر کا شکار کرنے نکلوں گا۔ میرا احتجاج عمران خان کی طرح نہیں بلکہ اپنے نانا ذوالفقار علی بھٹو اور شہید بی بی بے نظیر بھٹو کی طرح ہوگا۔ جب سے بی بی کا بیٹا آیا ہے سندھ میں تبدیلی آئی ہے، میں نہیں کہہ رہاکہ ایک دن یا ایک سال میں ہر مسئلے کا حل نکال سکتا ہوں، ہم سب ملکر کام کریں گے تو بہتری آئیگی۔ مجھے جن لوگوں نے اُردو سکھائی وہ سندھی بھی سکھائیں گے، اُردو بہتر ہوگئی ہے، سندھی بھی بہتر ہوجائیگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کو یہاں اوباڑو میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کیا۔ بلاول نے کہاکہ ہم نے حکومت کے سامنے 4 مطالبات رکھے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ سوئچ آن ہوتے ہی دہشت گردی شروع ہوجاتی ہے اور بند کرنے سے ختم ہوجاتی ہے، امن و امان کی ذمہ داری صوبائی اور وفاقی حکومت کی مشترکہ ہے، ملکر کام کرنے سے ہی بہتری آئیگی۔ انہوں نے کہاکہ گزشتہ روز کا جلسہ تو صرف کارنر مینٹگ تھی، دہشت گرد نہیں چاہتے کہ پیپلز پارٹی اپنی اصل طاقت دکھائے، اسی وجہ سے سکیورٹی خدشات کے پیش نظر ریلی منسوخ کردی ہے۔ پاکستان کی تمام زبانیں سیکھنا چاہتا ہوں۔ بلاول نے کہا کہ نوازشریف کو ایک اور موقع دینا چاہتا ہوں، انکا تیسرا دور ہے، ان سے لڑنا کھیل نہیں، ان سے لڑنے کیلئے گالی گلوچ نہیں، تجربے کار لوگوں کی رائے سے چلنا ہوگا، چاچا نے دکھانا ہے کہ وہ کھیل میں ہیں یا سیاست میں۔ نوازشریف نے چار مطالبات نہیں مانے تو وہ اصلی اور جمہوری ریلیاں، لانگ مارچ، دھرنے دیکھیں گے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ چاچا عمران سمیت جن کی نیت صاف ہے انکے ساتھ کام کرسکتا ہوں، چاچا عمران کیساتھ اب تک کوئی ورکنگ ریلیشن نہیں بنا، اگر ہم ملکرکام کرتے ہیں تونہ صرف نوازشریف کو نکالیں گے بلکہ شہبازشریف کا بھی یہ آخری دور ہوگا۔ صحافی کے سوال پر بلاول نے کہا کہ میری عمر 28 سال ہے، اس لحاظ سے تو وہ میرے چاچا ہی ہیں لیکن ہمارا بڑا شدید اختلاف رائے ہے۔
بلاول