ردالفساد کی کامیابی کیلئے قوم اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کرے، مسعود خان

06 مارچ 2017

اسلام آباد (نوائے وقت رپورٹ) صدر آزاد جموں وکشمیر سردار محمد مسعود خان نے کہا ہے کہ پاکستان کو اس وقت نظریاتی یکجہتی کی ضرورت ہے۔انتہا پسند قوتوں کو شکست دینے اور آپریشن رد الفساد کی کامیابی کے لیے پوری قوم اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کرے۔ رواداری کا فروغ اور دوسرے کے نقطہ ¿ نظر کو سنے اور سمجھنے کی کوشش کی جائے۔ نوجوان افواج پاکستان ، حکومت اور اپنی پارلیمنٹ کے ساتھ کھڑے ہوں۔ یہی شدت پسند قوتوں کے لیے شکست کا پیغام ہوگا۔وطن عزیز میں فساد پھلانے والی قوتیں دشمن کے ہاتھوں میں کھیل رہی ہیں۔ نوجوان نسل قنوطیت اور منفی سوچ کو ترک کرکے اجتماعی مفاد، ملکی سلامتی اور ترقی کے لیے خود کو وقف کردے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے گزشتہ روز یہاں کنونشن سنٹر اسلام آباد میں انجمن طلبا اسلام پاکستان کے زیر اہتمام عشق پاکستان طلبا کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ پاکستان بھر سے اتنی بڑی تعداد میں نوجوانوں کا یہ اجتماع منعقد کرنے پر میں انجمن طلبا اسلام کے رہنماو¿ں کو خراج تحسین پیش کرتا ہیں۔ عشق پاکستان در اصل عشق رسول ہے۔ یہ ملک اللہ اور رسول کے نام پر حاصل کیا گیا۔ یہاں اتباع رسول کے بغیر پاکستان کا تشخص قائم نہیں رہ سکتا۔ ملک کو اس وقت مضبوط تر کرنے کے لیے ہمیں اپنی صفوں میں اتحاد پیدا کرنا ہوگا۔ مضبوط پاکستان کے بغیر کشمیر کی آزادی ممکن نہیں ہوگی۔ نفاق کا فائدہ ہمارے دشمنوں کو پہنچے گا۔ اور نقصان اس ملک کے 18کروڑ عوام کو ہوگا۔ نفاق ایک لعنت ہے جسے ہر صورت ختم کرنا ہوگا۔اس وقت پاکستان کی10کروڑ آبادی نوجوانوں پر مشتمل ہے، جن کی عمریں30سال سے کم ہیں۔یہ ہمارے ملک کا بہت بڑا سرمایہ ہے۔ جس میں اعلی کردار ، اوصاف اور مہارت پیدا کرنے کی ضرورت ہے۔ پاکستان اور آزاد کشمیر کے نوجوان کردار سازی پر توجہ دیں۔ اعلی کردار کی حامل قومیں ترقی کرتی ہیں۔اور پست کردار کی اقوام تباہ ہوتی ہیں۔ اپنے شعبوں میں مہارت اور اعلی معیار قائم کرنے کی ہمہ وقت لگن ضروری ہے۔اس کے بغیر ہم پاکستان کو ترقی یافتہ ملک نہیں بنا سکتے۔ کل آپ کا مقابلہ اس خطے بلکہ پوری دنیا کے شہریوں سے ہوگا۔ سائنس و ٹیکنالوجی،طب،انجنیئرنگ اور آئی ٹی کے ماہرین دوسرے ملکوں سے بھی آئین گے۔ نجی شعبہ اسے ترجیح دے گا جو مہارت میں سب سے آگے ہوگا۔ پاکستان معاشی طاقت بننے کی راہ پر گامزن ہو چکا ہے۔ یہ ہم نہیں عالمی شہرت کے حامل ادارے اور اخبارات کہہ رہے ہیں۔ انجمن طلبا اسلام پاکستان کو معاشی طاقت بنانے کے لیے کردار ادا کرے ۔ صدر آزاد کشمیر نے پاکستان اور جموں و کشمیر کے ازلی و ابدی رشتے پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ پاکستان کشمیر اور کشمیر پاکستان کے بغیر نا مکمل ہے۔ہم ٹکڑوں کی صورت میں ریاست جموں و کشمیر کا حصہ نہیں بننا چاہتے۔ہم چاہتے ہیں کہ پوری ریاست پاکستان کا حصہ بنے کیونکہ پاکستان کے چاروں صوبوں کو سیراب کرنے والے تمام دریا کشمیر سے آتے ہیں اور آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان پاکستان کے دفاع کی مضبوط دیوار ہیں۔ صدر آزاد کشمیر نے نوجوانوں پر زور دیا کہ وہ کسی سے مرعوب نہ ہوں۔ اپنی صلاحیتوں پر اعتماد کریں۔آپ کو اللہ تعالی سے ایٹمی صلاحیت کے حامل ملک کا شہری اور اسلام کا فرزند ہونے کے ناطے پوری امت مسلمہ کی قیادت کے لیے چنا گیا ہے۔کنونشن سے میر نور الحق قادری سابق ایم این اے ، میاں فاروق مصطفائی، ڈاکٹر ابو الخیر زبیر، افتخار علی نوری، پیر علی رضا بخاری ایم ایل اے، اے ٹی آئی پاکستان کے صدر سید بو علی شاہ اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...