دہشت گردوں کے مکمل خاتمے تک فوجی عدالتوں کو توسیع دی جائے

06 مارچ 2017

اسلام آباد(نیوزڈیسک)سپرےم شےعہ علماءبورڈ کے سرپرست اعلی وتحرےک نفاذ فقہ جعفرےہ کے سربراہ آغا سےد حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ فوجی عدالتوں کو اس وقت تک توسےع دی جائے جب تک اس ملک سے دہشت گردوں کا ناپاک وجود ختم نہےں ہو جاتااور عدالتی نظام کی لاچاری و بے بسی ختم نہےں ہوجاتی ،عدالتی نظام کو اتنا موثر اور توانابناےا جائے کہ طاقتورمجرموں اور دہشت گردوں کو کےفر کردار تک پہنچا سکے اور عوام کوفوری سستا انصاف مہےا کر سکے ،دہشت گردی کو مسلک، دےن،صوبے نسل کے ساتھ نتھی نہ کےا جائے اےسا کرناانسانےت دشمنوں کےلئے ہمدردی کے جوازفراہم کرنے کے مترادف ہے وزےر اعظم کی جانب سے دہشت گردوں کے خلاف علاقے رنگ اور فرقے کی تمےز نہ کرنے کا اعلان صائب ہے عمل ہوتا نظر آنا چاہئے، 30سال سے ےہ کہتے چلے آرہے ہےں کہ دہشت گرد کا کوئی مسلک مذہب نہےں ہوتا اس سے اسی تناظر مےں نمٹا جائے ،بےرونی ممالک سے آنے والا سرماےہ نفرت انگےزی اور دہشت گردی کا بہت بڑا سبب ہے اےبڈو سے نےب تک صرف سےاستدانوں کا ہی احتساب کےا جاتا رہا دےن دوکان نہےں بلکہ ہداےت کی کان ہے لہذا اشد ضروری ہے کہ مذہبی جماعتوں اور رہنماو¿ں کا بھی احتساب کےا جائے کہ اربوں کھربوں کے مالک کےسے بنے ؟سب سے پہلے تحرےک نفاذ فقہ جعفرےہ کو احتساب کےلئے پےش کرتے ہےں ، کسی بھی مسلمہ مکتب فکر کو غےر مسلم کہنے کو قابل تعزےر جرم قرار دےا جائے،آپرےشن رد الفساد کے شہداءکو پوری قوم سلام پےش کرتی ہے، اختلاف رائے ےا تعمےری تنقےد کا جواب انتقام سے نہ دےا جائے، ہم کربلا والے ہےں جبر کو صبر سے شکست دےنا جانتے ہےں ۔ان خےالات کا اظہار انہوں نے تحرےک تحفظ ولاءو عزا کے مرکزی رہنما ذاکر علی رضا کھوکھر اےڈووکےٹ کی سرکردگی مےں ذاکرےن و عزاداروں کے وفد ے خطاب کرتے ہوئے کےا۔