چینی معیشت سست ترقی کے بعد استحکام اور بہتری کے دوسرے مرحلہ میں داخل

06 مارچ 2017

ژو جیاﺅنگ (خصوصی رپورٹ) چینی معیشت اقتصادی سست ترقی کے پہلے مرحلے کے بعدمعیار میں بہتری کے دوسرے مرحلے میں داخل ہوچکی ہے، اس حوالے سے ایک چینی ماہرِمعیشت نے کہا ہے کہ گزشتہ سال چینی میعشت سست روی لیکن استحکام کی جانب گامزن رہی، جبکہ پروڈیوسر پرائس انڈیکس جو فیکٹری کی سطع پر مصنوعات کی قیمتوں کا تعین کرتا ہے اس میں گزشتہ چارسال کے وقفے کے بعد خاطر خواہ اضافہ ہوا اس حوالے سے لیوئی جو کہ اسٹیٹ کونسل ڈیولپمنٹ کے ریسرچ سنٹر کیساتھ ڈائریکٹر کے عہدے پرتعین ہیں ،انہوں نے کہا کہ اسی مدت کے دوارن چین میں کاروباروں میں مثبت رجحان سامنے آیا ہے اور اس کے ساتھ ساتھ شہری علاقوں میں نئی ملازمتوں کی مثبت تخلیق بھی سامنے آئی ہے، اور انسب عوامل سے مجموعی تاثر یہ ملتا ہے کہ چین کی معیشت بہتری کی طرف گامزن ہے۔اور معیار اور اہلیت میں نمایاں ساضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ عالمی سطع پر جہاں معاشی تنزلی کا رجحان جاری ہے وہیں دوسری طرف چین میں ایکسپورٹ میں 7.7فیصد کا سالانہ اضافہ دیکھا گیا ہے، اسکے ساتھ ساتھ مینو فیکچرنگ کے شعبے میں غیر ملکی سرمایہ کاری میں تھوڑا بہت کمی کا سامنا ہوا ہے۔اس کے ساتھ چین کی دیگر مارکیٹس میں سرمایہ کاری میں نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیاہ ے اور سرکاری اعدادوشمار کے مطابق غیر مالیاتی براہ راست سرمایہ کاری میں سالانہ کی بنیاد پر ہر سال44 فیصد کا اضافہ ہوا ہے اور گزشتہ سال 2016میں اس کی شرح میں 170بلین ڈالر کا اضافہ ہوا ہے۔جبکہ گزشتہ سال اسی مدت میں اس کی شرح میں پندرہ فیصد اضافہ ہوا ہے۔اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ چین کی مقامی مارکیٹ غیر ملکی مارکیٹ کے برعکس بھر پور انداز میں ترقی کر رہی ہے۔اور چین کی مارکیٹ میں وسعت کے حوالے سے جاری پالیسز کے مثبت نتائج سامنے آرہے ہیں، اس تناظر میں چینی حکومت نے سنٹرل اکنامک ورک کانفرنس کے سالانہ اجلاس میں ملک میں حقیقی معیشت کے احیاءکو ترجیع دی ہے۔ اس اس ہدف کی تکمیل کے حوالے سے چین نے میڈ ان چائینہ برانڈ میں سارفین کے اعتماد کو بحال کیا ہے اور اس ہدف کی تکمیل کے لیے دیگر حکومتی ادارے مصنوعات کے معیار اور اہلیت کو برقرار رکھنے کے لیے نگرانی کے سخت معیار کو یقینی بنا رہے ہیں اور سارفین کے حقوق کا تحفظ یقینی بناتے ہوئے تمام اداروں کا معیار کے حوالے سے ماحول کو بہتر انداز میں استوار کیا ہے، اس حوالے سے لئی نے کہا کہ چینی حکومت پلان 2025کے تحت مینو فیکچرنگ کے شعبے کو خصوصی انداز میں فروغ دے رہی ہے۔اور مزید اس ہدف کو یقینی بنانے کے لیے قومی منصوبہ بندی اور کاروباروں میں جدت کے حوالے سے متعقلہ قوانین اور عوامل پر سختی سے عملدرامد کیا جا رہا ہے۔اس حوالے سے بہت سے ماہرین کا یہ بھی کہنا ہے کہ چینی کمپنیوں میں مینو فیکچرنگ کے حوالے سے مضبوط صلاحیت موجود ہے اورچین کو معاشی بہتری اور ترقی کے لیے اصلاحات کے عمل کو جاری رکھنا چاہیے اور سپلائی سائیڈ میں بنیادی اور تنظیمی اصلاھات کے عمل کو یقینی بنانا چاہیے اور رواں سال چین مستحکم ترقی کا سفر جاری رکھے گا اگر یہ کامیابی سے خطرات سے بچا رہتا ہے۔