پاکستان کا سرمایہ دار طبقہ امریکہ یورپ سے ہدایات لیتا ہے فضل الرحمان

06 مارچ 2017

کوئٹہ(آئی این پی)جمعیت علماءاسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ملک سے کرپشن ختم کرنے کا ایک ہی فارمولا ہے کہ ملک کا نظام جمعیت علمائے اسلام کے حوالے کردیا جائے،سرمایہ دار طبقہ اپنے مفادات کی بات کر رہا ہے،افسوس ہے مدرسے میں پڑھنے پڑھانے والے کو دہشتگرد کہا جاتا ہے،جمعیت علماءاسلام ملک میں امن کی بات کرتی ہے،جمعیت علمائے اسلام ملک کو اسلامی فلاحی ریاست بنانے کی جدوجہد کر رہی ہے،پانامہ لیکس میں بہت سے لوگوں کی کمپنیاں ہیں،لیکن ہماری نہیں۔۔وہ اتوار کو کوئٹہ میں جمعیت علمائے اسلام (ف) کے علماءکنونشن سے خطاب کر رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ افسوس ہے مدارس میں پڑھنے پڑھانے والوں کو دہشتگرد کہا جاتا ہے،گلہ تو ہمارا کہ ہمارے نوجوان کے کندھے پر بندوق کس نے رکھی،جمعیت علمائے اسلام امن کی بات کرتی ہے،ہمیں ملک میں قانون اور آئین کے تحت زندگی گزارنی ہے۔انہوں نے کہاکہ ملک میں 70سال مولویوں نے حکمرانی نہیں کی،ملک میں سرمایہ دار طبقہ اپنے مفادات کی بات کر رہا ہے،جن کا کوئی نظریہ نہیں جو امریکہ اور یورپ سے ہدایات لیتے ہیں،اپنے اندر سوچنے کی صلاحیت پیدا نہیں کرتے۔مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ کہا جاتا ہے ملک سے کرپشن کا خاتمہ نہیں ہوتا،کرپشن کا خاتمہ کرنے کا آسان طریقہ ہے،ملک کا نظام جمعیت علمائے اسلام ف کے حوالے کردیں،کرپشن ختم ہوجائے گی،کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی چیئرمین سینیٹ و جے یو آئی ف کے رہنما مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ جمعیت علمائے اسلام ملک کو اسلامی فلاحی ریاست بنانے کی جدوجہد کر رہی ہے،مولانا فضل الرحمان نہ للکارتے تو شوہروں کو کڑے لگے ہوتے،پانامہ لیکس میں بہت سے لوگوں کی کمپنیاں ہیں،لیکن ہماری نہیں۔
فضل الرحمن

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...