28 امریکی شہروں میں ٹرمپ کے حامیوں کی ریلیاں‘ مخالفین سے جھڑپیں

06 مارچ 2017

واشنگٹن (این این آئی + آن لائن) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سفری پابندیوں کا نیا صدارتی حکم نامہ آج (پیر کو) جاری کریں گے، غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق نئے حکم نامے میں پابندی کی زد میں آنے والے 7 مسلمان ممالک کی فہرست میں سے عراق کو نکالے جانے کا امکان ہے۔ عراق کو استثنیٰ دینے کا فیصلہ داعش کے خلاف جاری جنگ کے تناظر میں کیا گیا ہے جبکہ ایران‘ لیبیا‘ شام‘ صومالیہ‘ سوڈان اور یمن پر بدستور پابندیاں جاری رکھی جائیں گی۔ دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف ریلیوں کے بعد اب ٹرمپ کے حامی بھی میدان میں آگئے ہیں۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطا بق صدر ٹرمپ کے حامیوں نے امریکہ بھر میں 28 مختلف چھوٹے بڑے شہروں میں صدر کے حق میں ریلیاں نکالیں۔ ریلی میں شریک افراد کا کہنا تھا اس وقت صدر کو سپورٹ کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ ٹرمپ نے نوکریاں دینے کا وعدہ کر رکھا ہے۔ اس کے علاوہ وہ سرحدوں کو محفوظ بنانے کے لئے بھی کام کر رہے ہیں۔ڈونلڈ ٹرمپ کے صدر بننے کے بعد جہاں اقتدار کے ایوانوں میں مخالفین ایکدوسرے کیخلاف سخت زبان استعمال کررہے ہیں، وہیں گلی محلوں میں سیاسی کارکن بھی ایک دوسرے سے گتھم گتھا نظرآتے ہیں۔ مسلسل ٹرمپ مخالف مظاہروں کے بعد حکومتی جماعت کے حامیوں نے بھی عوامی ریلیاں نکالنے کا سلسلہ شروع کر دیا ہے۔ ایسا ہی ایک اجتماع کیلیفورنیا میں اس وقت پرتشدد ہوگیا جب ٹرمپ کے حامی اور مخالفین نعرے بازی کرتے کرتے مشتعل ہوگئے اورایک دوسرے پر ٹوٹ پڑے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق پہل کس نے کی یہ تو فیصلہ نہ ہوسکا لیکن تصادم کا آغاز سیاسی تنائو بڑھنے کی علامت ہے۔ وائٹ ہائوس کے بجٹ ڈائریکٹر نے تصدیق کی ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ اس مہینہ کے آخر میں غیرملکی امدادی بجٹ میں کمی کی تجویز دے گی۔