ٹرمپ کی حماقتیں

06 مارچ 2017

گزشتہ سے پیوستہ
ٹرمپ کے گرد حماقتوں کا جھرمٹ لگا ہے، اس نے ایران، عراق، لیبیا، صومالیہ، شام، سوڈان اور یمن کے شہریوں کے لئے امریکہ میں داخلے پر قدغن عائد کی مگر نیویارک کی عدالت نے ٹرمپ کی پابندی کو معطل کر دیا۔ ڈھیٹ ٹرمپ نے 29صفحات کے اس فیصلے پر نظرثانی کی اپیل دائر کی اور کہا کہ سات ملکوں کے شہریوں کے امریکہ میں داخلے پر پابندی کا صدارتی حکم امریکہ کے تحفظ کے لئے ضروری ہے مگر اپیل کورٹ میں بھی ٹرمپ کو شکست ہوئی تو اس نے یہ احمقانہ ٹویٹ کی ”کورٹ! میں دیکھ لوں گا۔ ہماری قوم کا تحفظ داﺅ پر لگا ہوا ہے۔“ اس ٹویٹ سے ٹرمپ کی حماقت کے ساتھ ساتھ ایک خوف اور ڈر بھی جھلک رہا ہے۔
ٹرمپ نے تہران پر دہشت گردی کا الزام لگایا، اس نے فاکس نیوز چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدہ بدترین معاہدہ تھا۔ حبیب جالب نے کیا خوب کہا تھا
یہ نفرتوں کی فصیلیں، جہالتوں کے حصار
نہ رہ سکیں گے ہماری صدا کے رستے میں
وہ اپنی حماقتوں کا خود بھی اعتراف کرتا ہے، اگست 2016ءمیں شمالی کیرولینا میں انتخابی ریلی کے دوران کہا کہ کبھی کبھی جوشِ خطابت میں اس کے منہ سے غلط الفاظ نکل جاتے ہیںجن پر وہ معذرت چاہتے ہیں۔
صدر بننے کے بعد اس نے اسلامی دہشت گردی کے خاتمے کی بات کر کے اسلام کے خلاف مزید بھڑاس نکالی، عیسائی، یہودی اور ہندو دہشت گردی کے خلاف کوئی ایک لفظ تک منہ سے نہ نکالا، ہندو دہشت گردی کے خلاف بات کرنا تو دور کی بات، وہ امریکی ریاست نیو جرسی میں منعقدہ ایک چیریٹی کانفرنس سے خطاب میں یہ کہہ چکا ہے کہ ”بھارت اور ہندوﺅں کا میں عاشق ہوں۔“ کیا انقلابات ایسے آیا کرتے ہیں؟ کیا دہشت گردی اس طرح کے متعصبانہ بیانات اور اقدام سے ختم ہوا کرتی ہے کہ ایک مذہب کے نام لیواﺅں ہی کو مشقِ ستم بنا لیا جائے؟ صرف بیگانے ہی نہیں، ٹرمپ تو اپنوں کے خلاف بھی زہر افشانی کرنے سے باز نہیں آتا۔ ٹرمپ کا یہ اکھڑ پن دنیا اچھی طرح دیکھ چکی ہے کہ امریکی ریاست پنسلواینا کے ایک ہائی سکول میں انتخابی ریلی سے خطاب کے دوران اس نے ڈیموکریٹک صدارتی امیدوار ہلیری کلنٹن کو شیطان قرار دیا۔ وہ میکسیکو پر حملے کی بات بھی کر چکا ہے۔ اگر ٹرمپ کی حماقتوں کا تانتا یوں ہی بندھا رہا، اگر اس کے دائیں بائیں بدحواسی اسی طرح جلوہ افروز رہی تو دو مٹیاروں کی یہ سنگت امریکی ریاستوں کو تتر بتر کر ڈالے گی اور یہ سارا اعزاز کسی ”مسلم دہشت گرد“ کے نہیں بلکہ ڈونلڈ ٹرمپ کے کھاتے میں جائے گا۔ پھر دنیا دنگ رہ جائے گی کہ ایک مخبوط الحواس شخص نے یہ کیا کر کے رکھ دیا۔
اس حادثے کو سن کر کرے گا کوئی یقیں
سورج کو ایک جھونکا ہوا کا بجھا گیا