دہشت گردی کی تازہ لہر اور ردالفساد

06 مارچ 2017

مکرمی! قانون نافذ کرنے والے ادارے بلاشبہ ماضی میں بہت بڑے دہشت گردی کے منصوبے ناکام بنانے میں اہم کر دار ادا کرتے رہے ہیں مگر دہشت گردی کا سلسلہ ابھی ختم نہیں کیا جا سکا۔ یہ چیلنج ہے جسے نہ صرف قبول کرنا ہے بلکہ اس میں کامیاب بھی ہو نا ہے۔ معلوم کرنا ہو گا کہ تخریب کاروں کے اصل اہداف کیا تھے۔ بیرونی ہا تھ خارج ازامکان نہیں۔ را، موساد اور سی آئی ائے کا گٹھ جوڑ پوری طر ح سرگرم ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ کسی بھی طر ح پایہ تکمیل تک نہ پہنچ سکے۔ بھارت کھل کر اس منصوبے کی مخالفت کر رہا ہے۔ بھارتی وزیراعظم مودی عوامی اجتماعات میں پاکستان کو دھمکیاں دے رہے ہیں بلکہ انہوں نے حال ہی میں ایک اعلیٰ سطحی وفد چین بھی بھیجا تھا۔ اگر چہ چین حکومت نے گھاس نہ ڈالی۔ ہمیں اپنی سکیورٹی کو فول پروف بنانے کے لئے تما م کمزوریوں کا جائزہ لینا ہو گا۔ دشمن ہماری خامیوں سے بھر پور انداز میں فائدہ اٹھا ر ہا ہے۔ بیرونی دشمن قوتوںکے علاوہ ملک کے اندر بھی اس طرح کی قوتیں اور اُن کے سہولت کار موجود ہیں جن کی سرکوبی ضروری ہے۔(محمد عمران الحق۔ لاہور)