حادثات میں مفلوج ہونے والے افراد کےلئے حکومت پنجاب کا انقلابی قدم

حادثات میں مفلوج ہونے والے افراد کے علاج اور بحالی کے لئے حکومت پنجاب کا انقلابی قدم, نگران وزیراعلیٰ محسن نقوی کی ہدایت پر صوبہ بھر کیلئے Paralegic سرو سز کا آغاز کردیا۔ٹریفک اور دیگر حادثات میں چوٹ لگنے سے مفلوج ہونے والے افراد کا علاج ممکن ہوگا۔ فالج کے خطرے سے دوچار زخمی مریضوں کو پیرالیجک ری ہیبلیٹیشن سنٹر میں فوری طبی امداد فراہم کی جائے گی۔ فوری علاج سے مریض کے مفلوج ہونے کا اندیشہ نہیں رہے گا۔ٹراماسپائنل کارڈ سرجری کیلئے پہلی مرتبہ پنجاب میں 5 سنٹرز قائم کئے جائیں گے ۔صوبہ بھر میں ایک حب سنٹراور چار سیٹلائٹ مراکز پر Paralegic سرو سزمیسر ہوں گی۔ملتان کے ڈی ایچ کیو ہسپتال میں حادثات میں مفلوج افراد کے لئے خصوصی مرکز قائم کیا جائے گا۔لاہور کے سمن آباد ہسپتال، فیصل آباد جنرل ہسپتال میں Paralegic سرو سزمیسر ہوں گی۔ واہ کینٹ اور تونسہ کے ٹی ایچ کیو میں بھی Paralegic سرو سزکا آغاز کیا جائے گا۔حادثات میں مفلوج ہونے والے افراد کا فوری علاج کیا جائے گا ۔سپائنل کارڈ انجری کی صورت میں بحالی کے لئے جدید فزیو تھراپی مشینیں بھی میسر ہوں گی۔معذوری کا شکار افراد کی بحالی کے لئے مصنوعی اعضا کی ورکشاپ قائم ہو گی ۔مصنوعی اعضا کی ورکشاپ کو آؤٹ سورس کرنے کا اصولی فیصلہ کیا ہے۔نگران صوبائی کابینہ نے پیرالیجک ری ہیبلیٹیشن سنٹر قائم کرنے کی منظوری دے دی۔

ای پیپر دی نیشن