لاہورہائیکورٹ نے توہین رسالت قانون میں ترمیم کے خلاف دائر درخواست سماعت کے لیے منظور کرتے ہوئے وفاقی حکومت سے جواب طلب کرلیا

06 دسمبر 2010 (23:29)
توہین رسالت قانون میں ترمیم کے خلاف ناصررسول نامی شہری نے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی تھی جس میں وفاقی حکومت اورشیری رحمان کو فریق بنایا گیا تھا۔ سماعت کے دوران درخواست گزار کے وکیل نے اپنا موقف اختیار کرتے ہوئے کہا کہ انیس سواکانوے میں شریعت اپلیٹ ٹربیونل بنچ نے توہین رسالت پرسزائےموت کا حکم سنایا تھا، حکومت کی جانب سے اس قانون میں ترمیم عدالت کی توہین ہے۔ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ خواجہ محمد شریف نے درخواست سماعت کے لیے منظور کرتے ہوئے وفاقی حکومت سے تئیس دسمبر کوجواب طلب کرلیا ۔ عدالت نے توہین رسالت کیس میں سزا پانے والی آسیہ بی بی کیس میں جاری کردہ حکم امتناعی میں تئیس دسمبر تک توسیع کردی ، لاہورہائیکورٹ نے صدر پاکستان کی جانب سے آسیہ بی بی کو معافی دینے کے خلاف درخواست میں حکم امتناعی جاری کررکھا ہے جس میں صدراورگورنرسے جواب بھی طلب کیا گیا تھا۔ سماعت کے دوران حکومتی اورگورنر پنجاب کے وکلاء نے عدالت سے جواب داخل کروانے کی مہلت طلب کی۔ جس پرفاضل عدالت نے آسیہ بی بی کیس میں جاری کردہ حکم امتناعی میں تئیس دسمبرتک توسیع کردی۔