حکومتی رازوں کی حفاظت کیلئے نئے اور سخت اقدامات کئے جا رہے ہیںا وباما انتظامیہ

06 دسمبر 2010 (17:05)
واشنگٹن (نمائندہ خصوصی) امریکی میڈیا کی اطلاعات کے مطابق اوباما انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ہزاروں خفیہ امریکی سفارتی دستاویزات کی اشاعت کے بعد حکومتی رازوں کی حفاظت کیلئے نئے اور سخت اقدامات کئے جا رہے ہیں تاہم سفارتکاروں کے مطابق امریکہ کی ساکھ کو جو نقصان پہنچنا تھا، وہ ہوگیا ہے اور اب امریکی کسی سیاستدان یا سفارتکار کے نزدیک قابل بھروسہ نہیں رہے ۔ اب دنیا میں بالکل نئی گیم ہوگی۔ دریں اثناءقومی اسمبلی سلامتی کے مشیر ٹام ڈونی لون کو وکی لیکس کے سارے معاملے کی چھان بین اور آئندہ روک تھام کیلئے ضروری اقدامات تجویز کرنے کی ذمہ داری سونپ دی گئی ہے۔ مزید برآں صدر اوباما کو انٹیلی جنس معاملات میں رہنمائی اور تجاویز دینے والے ایک آزاد اور خودمختار بورڈ کی بھی ذمہ دایر ہوگی کہ وہ دیکھے کہ خفیہ معلومات کی حفاظت کو کس طرح ممکن اور بہتر بنایا جاسکتا ہے۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...