کراچی :ملالہ پر حملہ کرنیوالے ملا فضل اﷲ کے کزن سمیت 4 دہشت گرد ہلاک

05 ستمبر 2017

کراچی (تنویر بیگ، کرائم رپورٹر) کراچی میں سچل کے علاقے کوئٹہ ٹائون میں پولیس کے ساتھ مقابلے میں کالعدم تحریک طالبان سوات اور داعش سے تعلق رکھنے والے چار خطرناک دہشت گرد ہلاک ہوگئے۔ کوئٹہ ٹائون میں خطرناک دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع ملی جس پر ایس ایس ملیر(صفحہ 9بقیہ 3)
رائو انوار پولیس کی بھاری نفری کے ہمراہ وہاں پہنچے اور مقابلے کے بعد چار دہشت گردوں کو مار گرایا جن کا تعلق ایس ایس پی ملیر رائو انوار کے مطابق کالعدم تحریک طالبان سوات سے تھا اور جو د اعش کے سا تھ مل کر کارورائیاں کررہے تھے ایس ایس پی نے بتایا کہ ہلاک دہشتگردوں میں سے ایک کی شناخت خورشید کے نام سے ہوئی ہے جو انتہائی مطلوب دہشت گرد ملا فضل اللہ کا کزن اورسوات میں ملالہ یوسف زئی پر حملے کے علاوہ پاک فوج اور پولیس کے جوانوں پر حملوں میں بھی ملوث تھا ایس ایس پی کے مطابق چاروں ہلاک دہشت گردوں کے قبضے سے بھاری اسلحہ برآمد ہوا ہے۔ نیٹ نیوز کے مطابق رائو انوار ایس ایس پی ملیر نے میڈیا پر بریفنگ میں کہا کراچی میں سچل کے علاقہ میں واقع صدف سوسائٹی کے قریب دہشت گردوں کی موجودگی کی خفیہ اطلاعات پر پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ اس دوران ایک گھر میں پناہ لیے ہوئے دہشت گردوں نے پولیس پر حملہ کر دیا اور شدید فائرنگ کی۔ ایس ایس پی ملیر رائو انوار کے مطابق کالعدم تنظیم ٹی ٹی پی کے کارندے داعش میں شامل ہو گئے ہیں۔ خورشید کے تین بھائی بھی سکیورٹی اداروں کے ہاتھوں مارے جا چکے ہیں۔ خورشید ملالہ یوسف زئی، سوات میں فوج کے افسران اور قائد آباد میں پولیس پر حملے میں ملوث تھا۔ ایس ایس پی رائو انوار نے بتایا کہ خورشید نے کراچی میں دہشت گردی کی کارروائیوں کے لیے گروپ بنایا ہوا تھا۔