کے سی سی اے آفس ‘ ہم خیال گروپ کے الیکشن آفس میں تبدیل

05 ستمبر 2017

کراچی (اسپورٹس رپورٹر) کے سی اے زون2سے الیکشن میں حصہ لینے والے 6امیدواران جاوید احمد خان، سید اسد علی، جمال ناصر ، سید شاہد علی، راشد احمد اور گوہر ولی قریشی نے پی سی بی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ کراچی ریجن میں بنائی گئی پرویثرنل کمیٹی کی منفی سرگرمیوں کا جائزہ لیتے ہوئے انہیں فی الفور تبدیل کرکے غیر جانبدارافراد پر مشتمل پرویثرنل کمیٹی قائم کی جائے تاکہ کراچی ریجن کے الیکشن منصفانہ اور غیر جانبدرانہ طریقے سے منعقد ہوسکیں۔ واضح رہے کہ موجودہ عبوری کمیٹی کے چیئرمین آصف علی خان ‘ فاروقی پینل کیخلاف الیکشن مہم میں بھرپور حصہ لیتے رہے ہیں اورووٹرز کو اپنی وفاداریاں تبدیل کرنے کیلئے دباو¿ ڈالتے رہے ہیں۔جس کے شواہد ہمارے پاس موجود ہیں بلکہ ’ہم خیال گروپ‘ بھی انہی کی سربراہی میں تشکیل دیا گیا ہے ۔ ہم خیال گروپ کے کوارڈنیٹر خالد نفیس ، سیکریٹری شفیق کاظمی، پی آراو فرسٹ کلاس ایمپائرجنید غفور اور ممبرا ن باقاعدگی سے کے سی سی اے آفس میں بیٹھ کر الیکشن مہم چلارہے ہیں پی سی بی کے اس اقدام پرکرکٹ کے حلقوں نے کراچی ریجن کیلئے جانبدرانہ عبوری کمیٹی تشکیل دے کر سب کو حیرت میں ڈال دیا ہے ۔ کرکٹ کے حلقوں کا کہنا ہے کہ کراچی نہ صرف پاکستان بلکہ ایشیا کی سب سے بڑی کرکٹ نرسری ہے ہم اسے ناتجربہ کار اور جانبدار لوگوں کے ہاتھ بربادنہیں ہونے دیں گے۔ کے سی سی اے زون2کے 6امیدواروں اور کرکٹ کے حلقوں نے پی سی بی کے چیئرمین نجم سیٹھی سے مطالبہ کیا ہے کہ کراچی کی کرکٹ کو مکمل تباہی سے بچاتے ہوئے کراچی ریجن میں غیر جانبدار عبوری کمیٹی تشکیل دی جائے کیونکہ ’ہم خیال ‘ گروپ کی صورت میں موجودہ کمیٹی آصف علی خان کی سربراہی میں کراچی کرکٹ کو تباہی کی طرف لے جارہے ہےں۔ واضح رہے کہ 9اگست 2017کو موجودہ کمیٹی کا تقررنامہ جاری ہوا تھا جس میںانہیں ایک ماہ کیلئے یعنی 9ستمبر 2017تک مقرر کیا گیا ہے ۔ 9ستمبر 2017کے بعد یہاں کرکٹ کی سمجھ بوجھ رکھنے والی غیر جانبدار عبوری کمیٹی تشکیل دی جائے جو کہ کے سی سی اے کے الیکشن تک نہ صرف اپنی ذمہ داری احسن اور منصفانہ طریقے سے انجام دے سکے بلکہ انتخابی عمل کو شفاف بنانے میں بھی کوئی کسر نہ اٹھا رکھے۔