پاکپتن : سفاک شخص نے 3سالہ بچی کو درندگی کے بعد قتل کر دیا

05 ستمبر 2017

پاک پتن(نامہ نگار)درندگی کی شرمناک مثال ،تین سالہ بچی زیادتی کے بعد قتل، ہاتھ پائوں بندھی ہوئی نعش کھیتوں سے برآمد، نامعلوم ملزم کیخلاف مقدمہ درج ۔ بتایا گیاہے کہ راکھ پل کے قریب پانچ مرلہ سکیم کے رہائشی اعجاز کی تین سالہ بیٹی تجلا کونامعلوم درندہ صفت نوجوان نے اغوا کرکے زیادتی کانشانہ بنایا ۔ بچی کو قتل کرکے نعش قریبی کھیتوں میں پھینک دی ۔ مقتولہ کے ورثاء بیٹی کی بندھی ہوئی نعش کو دیکھ کر غم سے نڈھال ہوگئے۔ تھانہ صدرپولیس نے نعش کوقبضہ میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لیے ڈی ایچ کیو ہسپتال پہنچادی ہے ۔واقعہ کی اطلاع ملتے ہی ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کامران یوسف ملک ڈی ایچ کیو ہسپتال پہنچ گئے جہاں انہوں نے بچی کے ورثا کو انصاف کی فراہمی کی یقین دہانی کروائی جس کے بعد انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بچی کی پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد پتا چلے گا کہ بچی کو زیادتی کانشانہ بنایا گیا ہے یانہیں ۔ واضح رہے کہ ضلع پاکپتن میں اس طرح درندگی کایہ 20 دن میں دوسرا واقعہ ہے 13اگست کوقبولہ میں محنت کش ناصررحمانی کی پانچ سالہ بچی ام کلثوم کوبھی گینگ ریپ کے بعدقتل کرکے نعش کھیتوں میں پھینک دی تھی۔
بچی قتل