برما کے مسلمانوں سے ہر ممکن تعاون کرنا مسلمان حکمرانوں کی ذمہ داری ہے،مولانا حمد اللہ

05 ستمبر 2017

صوابی( نامہ نگار) جے یو آئی کے سر پرست اعلی اور بزرگ عالم دین مولانا حمد اللہ جان نے کہا ہے کہ برما کے مسلمانوں کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرنا مسلم حکمرانوں کی ذمہ داری ہے پاکستان اس حوالے سے موثر آوازاُٹھائے ان خیالات کااظہار انہوں نے ضلعی امیر مولانا عطاء الحق درویش کے ساتھ ملاقات کے دوران کیا۔ اس موقع پر ضلعی نائب امیر اشفاق اللہ خان، تر جمان محمد ہارون حنفی بھی موجود تھے۔ انہوںنے کہا کہ امریکہ نے پاکستان کو امداد دینے سے زیادہ نقصان پہنچا یاہے پاکستان کو چاہئے کہ وہ دہشت گردی کے خلاف ہونے والے جنگ میں امریکی اتحاد سے نکل جائے۔ پاکستان کو کسی امداد کی ضرورت ہے انہوں نے کہا کہ آج برما کے روہنگیا ں مسلمانوں پر ظلم کے پہاڑ توڑے جارہے ہیں ان کی کھلم کھلا نسل کشی جاری ہے بدھ مت کے انتہا پسند برما کے حکومت کی سر پرستی میں مسلمانوں کے سر قلم کر رہے ہیں جب کہ اُمت مسلمہ اور خاص کر چالیس ممالک کے تعاون سے بننے والی اسلامی فوج خاموش تماشائی بنی ہو ئی ہے ان کا کہنا تھا کہ بہت آفسوس کی بات ہے کہ آج ترکی کے صدر طیب اردگان کے علاوہ کسی بھی اسلامی ملک کے سر براہ نے برما کے مظلوم مسلمانوں کے لئے کوئی آواز نہیں اُٹھائی جب کہ برما کے مسلمانوں کی سفاکانہ قتل عام پر اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی علمبر دار تنظیموں کی خاموشی تو سمجھ میں آتی ہے مگر پاکستان سمیت سعودی عرب اور دیگر اسلامی ممالک کی خاموشی انتہائی مایوس کن ہے آج بر ما کے مسلمان محمد بن قاسم جیسے شخصیت کے منتظر ہے جو کہ آکر انہیں بد ھ مت کے دہشت گردوں سے بچا سکے۔ پاکستان میں ہر شخص برما کے مسلمانوں کی بہیمانہ قتل عام پر خون کے آنسو رو رہا ہے مگر جو لوگ اقتدار کے مزے لوٹ رہے ہیں انہیں اپنے مسلمان بھائیوں کی نسل کشی نظر نہیں آرہی ہے #
مولانا حمد اللہ