حکومت اور اداروں میں تصادم سے ریاست کمزور ہو رہی ہے: خورشید شاہ

05 ستمبر 2017

سکھر (نامہ نگار)قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ نے کہا ہے کہ حکومت اور اداروں کے درمیان تصادم کے باعث ریاست کمزور ہورہی ہے آج صورتحال یہ ہے کہ جن ممالک کیلئے ہم نے قربانیاں دیں وہ ہمیں دھمکیاں دے رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سکھر میں عیدملن پارٹی سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ خورشید شاہ نے کہا کہ جنرل ضیاء الحق نے مجاہدین اورطالبان بنائے جس کے باعث ملکی حالات خراب ہوئے۔ ضیاء الحق نے پاکستان کہ امریکہ کے ہاتھوں میں رکھ دیا پاکستان کے 60ہزار عوام اور 20ہزار سیکورٹی اہلکار اس نام نہاد جنگ میں شہید ہوئے حالانکہ یہ جنگ ہماری نہیں تھی پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں 12ہزار 6سو ارب روپے خرچ کئے اگر یہی پیسہ پاکستان پر لگتا تو پاکستان دنیا کا خوشحال ملک ہوتا آج ملک کا وزیراعظم سڑکوں پر مارا مارا پھررہا ہے اور ہر کسی سے پوچھ رہا ہے کہ میرا قصور کیا ہے نواز شریف کو ہم نے بہت سمجھایا تھا مگر وہ نہیں سمجھے۔ علاوہ ازیں۔ صوبائی وزیر اطلاعات سید ناصر حسین شاہ نے کہا ہے کہ سندھ حکومت بے نظیر بھٹو قتل کیس میں اشتہاری قرار دیئے جانے والے پرویز مشرف کی انٹرپول سے گرفتاری کیلئے وفاقی حکومت سے درخواست کرے گی۔ انہوں نے کہاکہ جس طرح بے نظیر بھٹو کے قتل کے بعد تمام ثبوت مٹانے کی کوشش کی گئی اور جس طرح عدالت نے پولیس والوں کو سزائیں دی ہیں اس سے تو پرویز مشرف مجرم بنتے ہیں تاہم جن دہشت گردوں کو رہا کیا گیا ہے وہ قابل تشویش ہے اس لئے ہم اس فیصلے سے متفق نہیں ہیں اور اس حوالے سے قانونی ماہرین سے مشاورت کررہے ہیں ان کا کہنا تھا کہ ناہید خان جب ساتھ تھیں تو کچھ اور اب الگ ہیں تو کچھ اور باتیں کررہی ہیں پیپلز پارٹی نے تو اپنے دور حکومت میں محترمہ کی شہادت کی تحقیقات اسکاٹ لینڈ یارڈ یا دیگر اداروں سے کرائیں تھیں ان کا کہنا تھا کہ کراچی میں بارش کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال پر الزام تراشیاں ٹھیک نہیں۔
خورشید شاہ