انٹری ٹیسٹ کا پریشر

05 ستمبر 2017

مکرمی! آجکل جو یونیورسٹیوں میں داخلے کیلئے انٹری ٹیسٹ رکھا گیا ہے یہ طالب علموں پر ایک ذہنی پریشر ڈالتا ہے اور بہت سے طالب علم مایوس ہو کر یا تو پڑھنا چھوڑ دیتے ہیں یا خود کشی کر لیتے ہیں جو کہ ایک افسوسناک حقیقت ہے۔ طالب علم بساط سے بڑھ کر اینٹری ٹیسٹ کی تیاری پر خرچہ کرتے ہیں حکام بالا سے گزارش ہے کہ اس ٹیسٹ کو ختم کر کے بورڈ کے ہونے والے امتحانات کو توجہ سے چیک کیا جائے اور انہی امتحانات کی بنیاد پر داخلے کئے جائیں اور کسی بھی طالب علم کے ساتھ زیادتی نہ کی جائے اور یونیورسٹیوں میں سیٹوں کے کم ہونے کی وجہ سے طالب علموں کے مستقبل کو برباد نہ کیا جائے اور طالب علموں کو آگے بڑھنے کا موقع دیا جائے اور سیٹوں میں زیادہ سے زیادہ اضافہ کیا جائے۔

(کنزا عامر، لاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی)