غیروں کی طرف دیکھنے کی بجائے اپنی ثقافت اور روایات کی پابندی کی جائے: پیر کبیر شاہ

05 فروری 2012
غیروں کی طرف دیکھنے کی بجائے اپنی ثقافت اور روایات کی پابندی کی جائے: پیر کبیر شاہ
لاہور (خصوصی رپورٹر) نبی آخرالزمان حضرت محمد کی شخصیت خالق کائنات کے احکامات و برکات کی مجسم تصویر ہے جہاں سے انسانیت کو مصائب و الم سے بچانے اور دنیا و آخرت میں اللہ تعالیٰ کی رحمت سے فیضیاب ہونے کی راہ ملتی ہے، وہ راہ جسے رب تعالیٰ نے صراط مستقیم قرار دیا ہے، وہ راہ جو ایسے لوگوں کے لئے مختص کر دی گئی جو اپنے رب کے انعام کے حقدار ٹھہرتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار پیر سید محمد کبیر علی شاہ گیلانی سجادہ نشین چورہ شریف نے گذشتہ شب جشن عید میلاد النبی کے سلسلے میں 37ویں سالانہ اجتماع سے خیابان چورہ شریف لاہور میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر 1163 پونڈ وزنی کیک کاٹا گیا اور لنگر تقسیم کیا گیا۔ پیر سید محمد کبیر علی شاہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جب پوری دنیا جہالت کے اندھیروں میں ڈوبی ہوئی تھی، ظلم و جبر پھیل رہے تھے، عدل او ر عدالت اپنا مقام کھو بیٹھے تھے، عام انسان کی زندگی میں پریشانی و پشیمانی نمایاں ہو رہی تھی، بیٹیوں کو زندہ درگور کر دیا جاتا تھا، ہاتھوں سے بنائے گئے بتوں کی پوجا ہوتی تھی، اخلاقیات کا مذاق اڑایا جاتا تھا، تب اللہ نے حضرت محمد کی ذات بابرکات کو رہنمائی کے لئے اس جہاں میں بھیجا۔ انہوں نے اسوہ حسنہ کے ذریعے دنیا کے انسانوں کو عمل و برکت کے لافانی اصولوں سے روشناس کرایا۔ ملک بھر میں گھر گھر درود و شریف پڑھنے کی تبلیغ شروع کی گئی ہے اور موجودہ سال کے دوران 105 کھرب درود شریف او ر ایک لاکھ 529 بار قرآن پاک پڑھا گیا ہے، یہ سلسلہ جاری ہے۔ اس کے علاوہ اسلامی اقدار کے فروغ کے لئے چادر اوڑھ تحریک کا آغاز کیا ہے جسے بڑی پذیرائی مل رہی ہے اس سے ہماری قوم کو جدید کلچرل اور عریانی و فحاشی سے نجات ملے گی۔ چادر ہماری خواتین کی عظمت و آبرو کی محافظ ہے، چادر اوڑھنے سے ہماری خواتین کی جان اور ایمان محفوظ ہو جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں غیروں کی طرف دیکھنے کی بجائے اپنی ثقافت اور روایات کی پابندی کرنی چاہئے۔ اجتماع کی افتتاحی نشست میں ممتاز صحافی مجید نظامی مہمان خاص تھے۔ پیر کبیر علی شاہ نے ان کی دستار بندی کی، اس موقع پر دعا ہوئی اور تقریبات کا آغاز ہوا۔ دوسری نشست میں چیف جسٹس (ریٹائرڈ) میاں محبوب احمد، انور رشید مہمان خاص تھے۔ اجتماع کا اختتام صبح نماز فجر کے بعد ختم و دعا سے ہوا۔ پیر سید محمد کبیر علی شاہ گیلانی نے دعا اور اختتامی خطاب کیا۔ اجتماع میں شرکت کرنے والی قابل ذکر شخصیات میں پیر سید احمد مصطفین حیدر شاہ گیلانی، سید احمد سبطین حیدر شاہ ، سید محمد اعجاز حیدر شاہ، کرتو شریف، علامہ منشاءتابش قصوری، پیر محمد ارشد شاہ ہاشمی، پیر سید محمد شاہد شاہ، حافظ خلیفہ محمد عظیم مجددی کیلاسکے شامل تھے۔ حافظ رضوان مجددی نے نعت شریف پیش کی۔