A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined index: category_data

Filename: frontend_ver3/Templating_engine.php

Line Number: 35

نیٹو حملہ پر امریکہ سے باضابطہ معافی کا کوئی مطالبہ نہیں کیا: حنا کھر

05 فروری 2012
اسلام آباد(این این آئی)امریکی وزیر خارجہ حنا ربانی کھرنے واضح کیا ہے کہ نیٹو ممالک کے خلاف نہیں مگر ملکی مفاد اور قومی سلامتی پر کسی قسم کا کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائےگا دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیاں کسی سے ڈھکی چھپی نہیں دنیا پاکستانی قربانیوں کا اعتراف کرے نیٹو حملہ پر امریکہ سے باضابطہ معافی کا کوئی مطالبہ نہیں کیا پاک امریکہ تعلقات کے معاملہ پر پارلیمنٹ کی سفارشات پر عمل کریں گے پرامن اور مستحکم افغانستان ہی پاکستان کے مفاد ہے امن مذاکرات کی حمایت کرینگے پاک ایران گیس منصوبہ پر امریکی اور یورپی یونین کی پابندیوں سے کوئی اثر نہیں پڑے گا منصوبہ مکمل کیا جائےگا ۔ نجی ٹی وی کو انٹرویو میں وزیر خارجہ حنا ربانی کھر نے کہا کہ طالبان امریکہ مذاکرات میں پاکستان کا کوئی کردار نہیں تاہم چاہتے ہیں افغان اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کریںافغان حکومت قیام امن کیلئے جب مدد مانگے گی ہم اس کا ساتھ دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ سپریم ہے، پاک امریکہ تعلقات کے بارے میں فیصلہ پارلیمنٹ کرے گی۔ قومی سلامتی کمیٹی کی سفارشات کو حتمی شکل دے دی گئی۔امریکہ کی طرف سے معافی مانگنے کے بدلے نیٹو سپلائی لائن کھولنے پر ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم نے امریکہ سے باضابطہ معافی کا کوئی مطالبہ نہیں کیا ہم امریکہ سے تعلقات کے معاملہ پر پارلیمنٹ کی سفارشات پر عمل کریں گے۔ اگر امریکہ ریڈ لائنز کو عبور کرے گا تو یہ اس کے مفاد میں نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ہم نیٹو ممالک کے خلاف نہیں لیکن ہم چاہتے ہیں کہ ہماری سرحدوں اور قومی سلامتی کا احترام کیا جائے،دہشت گردی کے خلاف ہماری قربانیوں کا اعتراف کیا جائے۔ ایک سوال کے کوجواب میں وزیر خارجہ نے کہاکہ ہمارا ملک توانائی بحران کا شکار ہے ، پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبہ مکمل کیا جائے گا۔