شہباز شریف کی زیر صدارت اجلاس، ڈینگی کے تدارک کی تیاریوں کا جائزہ

05 فروری 2012
لاہور (خصوصی رپورٹر) وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی زیر صدارت ڈینگی کے تدارک کے لئے انتظامات اور تیاری کے سلسلے میں اجلاس ہوا۔ اجلاس میں سیکرٹری صحت اور ماہرین نے آئندہ سیزن میں ڈینگی کے تدارک کے لئے کئے گئے انتظامات پر بریفنگ دی۔ پنجاب حکومت نے پیشکش کی کہ دوسرے صوبوں کو ڈینگی کے خلاف تکنیکی مدد دینے کو تیار ہیں۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نے چیف سیکرٹری کو دوسرے صوبوں سے رابطے کی ہدایت کر دی۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا کہ حکومت پنجاب نے گذشتہ برس ڈینگی کی وبا سے نمٹنے کے لئے ٹھوس اقدامات کئے اور ڈینگی کے خلاف مہم کو ایک تحریک کی شکل دی گئی جس میں سیاستدانوں، افسروں، ڈاکٹروں، نرسوں ، پیرا میڈیکل سٹاف اور ماہرین نے مثالی کردار ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ سیزن میں بھی ڈینگی کی ممکنہ وبا سے نمٹنے کے لئے ہرممکن اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ بیرون ملک سے ڈینگی کی تربیت حاصل کرنے والوں کو ایک سال تک کسی دوسری جگہ تبدیل نہیں کیا جائے گا۔ چیف سیکرٹری کی سربراہی میں کمیٹی تشکیل دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ کمیٹی مختلف محکموں کی جانب سے ڈینگی کے سدباب کے حوالے سے کئے اٹھائے گئے اقدامات کا تفصیلی جائزہ لے اور دو روز میں رپورٹ پیش کرے۔ گذشتہ سال ڈینگی کی وبا سے نمٹنے کے لئے جو حکمت عملی اپنائی گئی اس کی بدولت ہزاروں قیمتی جانیں بچائی گئیں اور آئندہ سیزن میں ڈینگی کی ممکنہ وبا سے نمٹنے کے لئے بھرپور تیاری کی گئی ہے۔ انہوں نے منتخب نمائندوں کو ہدایت کی کہ وہ ڈینگی کے سدباب کے لئے کئے گئے اقدامات کا جائزہ لینے کے لئے ہسپتالوں اور تعلیمی اداروں کے اچانک دورے کریں اور ہسپتالوں میں ہائی ڈپینڈسی یونٹس کا بھی معائنہ کریں۔ محکمہ صحت نہ صرف نگرانی کا م¶ثر نظام قائم کرے بلکہ سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ سے بھی ہرممکن معاونت کرے۔ ڈینگی کی وبا میں رضاکاروں کی شمولیت کے لئے بھی پلان مرتب کیا جائے اور ایسے رضاکار بھرتی کئے جائیں جو صحیح معنوں میں دکھی انسانیت کی خدمت کا جذبہ رکھتے ہوں۔ انہوں نے اس ضمن میں شائستہ ملک کی سربراہی میں رضاکاروں کی بھرتی کے حوالے سے لائحہ عمل مرتب کرنے کے لئے کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کی۔ طلبا کو ڈینگی کے حوالے سے آگاہی کے لئے نصاب میں شامل کئے گئے علیحدہ باب کے پروگرام پر پوری طرح عملدرآمد کیا جائے، امتحانات میں بھی اس حوالے سے سوالات کو لازمی شامل کیا جائے۔